پوسٹ آفس: خاتون کو ہراساں کرنیکا معاملہ‘ درخواست پر ایک ہفتے میں فیصلے کا حکم

پوسٹ آفس: خاتون کو ہراساں کرنیکا معاملہ‘ درخواست پر ایک ہفتے میں فیصلے کا ...

  



ملتان (کو رٹ رپورٹر) ہائیکورٹ ملتان بنچ نے پوسٹ آفس کی ملازم خاتون کو جنسی ہراساں کرنے سے متعلق درخواست پر پوسٹ ماسٹر جنرل کو ایک ہفتے میں درخواست پر (بقیہ نمبر43صفحہ12پر)

فیصلہ کرنے کا حکم دے دیا ہے۔ فاضل عدالت میں پوسٹ آفس ملتان کی اپر ڈویڑن کلرک شاہدہ زیب نے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ اس کو اکاؤنٹ آفیسر احمد نواز جنسی طور پر ہراساں کر رہا تھا جس پر 2019 میں حکام نے ایک اصل حقائق سامنے لانے کے لیے کمیٹی تشکیل دی اور انکوائری شروع کرائی کمیٹی نے مذکورہ افسر احمد نواز کو قصوروار ٹھہراتے ہوئے تبادلہ کرنے اور ایکشن لینے کی تجاویز پیش کیں۔ محض تبادلہ کیا گیا لیکن کوئی ایکشن نہیں لیا گیا اور 50 فیصد عملدرآمد نہیں ہوا اب چھ سے سات ماہ گزر چکے ہیں اور ملزم بااثر ہونے کی وجہ سے دوبارہ تحقیقات کرانا چاہتا ہے جو کہ قانون کے خلاف ہے اور ملزم کی جانب سے کنٹرولر جنرل اکاؤنٹس کو دی گئی درخواست بھی خلاف قانون ہے چونکہ وہ پوسٹ آفس کا ملازم ہے جو اکاؤنٹس آفس کے ماتحت نہیں۔ اس لیے مذکورہ درخواست پر عملدرآمد کو روکنے کا حکم دیا جائے۔ جس پر فاضل عدالت نے پوسٹ ماسٹر جنرل کو ایک ہفتہ میں درخواست پر فیصلہ کرنے کا حکم دیا ہے۔

فیصلہ

مزید : ملتان صفحہ آخر