بھارت انتہا پسندی کا گڑھ بن چکا،چوہدری سرور

بھارت انتہا پسندی کا گڑھ بن چکا،چوہدری سرور

  



لاہور(نمائندہ خصوصی) گورنر پنجاب چوہدری محمدسرور سے ڈیبی ابراہمس سمیت 6 اراکین برطانوی پار لیمنٹ کی ملاقات۔برطانوی وفد نے گور نر پنجاب کو کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف وزریوں پر برطانوی پار لیمنٹ میں بھر پور آواز بلند کر نے کی یقین دہانی کروادی جبکہ گور نر پنجاب چوہدری محمدسرور نے کہا ہے کہ بھارت انتہا پسندی کا گڑھ بن چکا ہے دنیا آخر کب تک خاموش رہے گی، کشمیر میں بھارتی مظالم کیخلاف دنیا کی خاموشی بھی کسی جرم سے کم نہیں ہوگی۔ تفصیلات کے مطابق جمعہ کے روز گورنر پنجاب چوہدری محمدسرور سے بر طانوی ا راکن پار لیمنٹ ڈیبی ابراہمس، مارک ایسٹوڈ،سارہ برٹکلف،لارڈ قربان،جوڈی کمننز،طاہر علی،عمران حسین، کونسلر و ممبر نیشنل ایگزیکٹو کمیٹی لیبر پارٹی یاسمین ڈاراور راجہ نجابت حسین سمیت دیگر نے ملاقات کی جس میں مسئلہ کشمیر،بھارت کے جنگی جنون اور خطے کی مجموعی صورتحال کے بارے میں بات چیت کی گئی۔ ملاقات کے دوران گور نر پنجاب نے کہا کہ نر یندر مودی آر ایس ایس کے ہر غنڈے کو ''مودی''بنا رہا ہے، کشمیر میں انسانیت اور انسانی حقوق کا قتل عام کیا جارہا ہے 200دن سے جاری کر فیو نے کشمیر کو دنیا کی سب سے بڑی جیل بنا دیا ہے۔ اقوام متحدہ سمیت تمام عالمی ادارے مسئلہ کشمیر پر خاموش تماشائی بننے کی بجائے کشمیر میں کر فیو کے خاتمے اور مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کر وانے کیلئے اپنا کردار ادا کر یں۔انہوں نے کہا کہ بر طانوی اراکین کو کشمیر جانے سے روکنا بھارت کی شر مناک حرکت ہے جبکہ اس موقعہ پر بر طانوی وفد نے کہا کہ کشمیر میں جو کچھ ہورہا ہے وہ پوری دنیا کیلئے لمحہ فکر یہ ہے، جسکے خلاف ہم بر طانوی پار لیمنٹ میں بھر پور آواز بلند کریں گے۔

چوہدری محمدسرور

مزید : صفحہ آخر