حکومت اور اپوزیشن کے حلقوں کر برابر ترقیاتی کام ملنا چاہئے: علی محمد خان

حکومت اور اپوزیشن کے حلقوں کر برابر ترقیاتی کام ملنا چاہئے: علی محمد خان

  



اسلام آباد(آئی این پی)قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی کابینہ سیکرٹریٹ کے اجلاس میں کابینہ حکام نے بتایا کہ گرین لائنز بس ریپڈ ٹرانز ٹ سسٹم اس سال دسمبر تک مکمل ہو جائے گا منصوبے کے لئے 2,750ملین روپے اخرجات آئیں گے منصوبے کاآخری تین کلو میٹر کا حساس علاقے میں ہونے کی وجہ سے ابھی تک پایہ تکمیل کو نہیں پہنچ سکا۔ اس منصوبے کے آپریشنز کی ایکنک سے منظوری کے بعد چالیس ہفتے لگیں گے، گرین لائن منصوبے کی سولہ لفٹیں لگ گئی ہیں بیڑی پھینکنے سے دو ایسکلیٹرز میں آگ لگ گئی تھی جس سے وہ متاثر ہوئیں وزیرمملکت علی محمد خان نے کہاکہ اگر آئندہ کسی قومی منصوبے میں بلوچستان اور سابق فاٹا کا حصہ نہ ہوا تو میں کابینہ سیکرٹریٹ کے منصوبوں کی حمایت نہیں کروں گا حکومت اور اپوزیشن کے حلقوں کو برابر ترقیاتی کام ملنا چاہئے کمیٹی نے اگلے اجلا سوفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کو اجلا س میں طلب کر لیا۔ جمعہ کو قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے کابینہ سیکرٹریٹ کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سید امین الحق کی صدارت میں پارلیمنٹ لاجز میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں گرین لائن بس ریپڈ ٹرانزٹ سسٹم پر فنانشل آفسر اشرف بلال نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایاکہ اجلاس میں کراچی کے گرین لائن منصوبے کی تکمیل کا جائزہ لیا گیا تو کمیٹی کو بتایا گیا کہ سال 2018میں پہلا مرحلہ مکمل ہوچکا ہے اب کام رکا ہوا ہے۔چیئرمین کمیٹی سید امین الحق نے کہا کہ کراچی ملک کا بدقسمت شہر ہے جہاں ریپیڈ ٹرانسپورٹ کا کوئی منصوبہ نہیں ہے اس منصوبے کو ڈیڈ لائن تک مکمل ہونا چاہئیے تاکہ عوام کو ریلیف ملے منصوبے کا انفراسٹرکچر مکمل ہوچکا ہے مگر آپریشنز رک جانے سے یہ منصوبہ ایسے ہی پڑا ہے وزیر منصوبہ بندی سے درخواست کریں گے کہ منصوبے کے اپریشنز کے لئے فنڈز جاری کریں فائٹر فائٹنگ سسٹم کراچی کے لئے بہت ضروری ہے، کے ایم سی کے فائر فائٹنگ سسٹم کے منصوبے کو جلد مکمل کریں قائمہ کمیٹی نے آئندہ اجلاس میں وزیر منصوبہ بندی کو طلب کرلیا رکن کمیٹی سیما جمیلی نے کمیٹی روم میں لگی خراب گھڑی کی طرف توجہ دلا دی جہاں کمیٹی اربوں روپے کا بجٹ دے رہی ہے سی ڈی اے کواس گھڑی کے سیلز کے لئے پیسے دے دی اذان کی وجہ سے پتا چلا کہ وقت کیا ہوگیا ہے انکی گھڑی پونے نو بجا رہی ہے یہاں گھڑی پر پونے نو بج رہے ہیں یہ سی ڈی اے کی سنجیدگی کا عالم ہے۔

علی محمد خان

مزید : صفحہ آخر