امریکہ کا افغان امن معاہدہ 29فروری کوطے پانے کا اعلان، پاکستان، چین،روس سمیت اقوام متحدہ کے اعلی حکام عالمی ضمانت کا ر ہونگے

امریکہ کا افغان امن معاہدہ 29فروری کوطے پانے کا اعلان، پاکستان، چین،روس سمیت ...

  



واشنگٹن (اظہر زمان، خصوصی رپورٹ) امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے تصدیق کی ہے کہ طے شدہ پلان کے مطابق 29فروری کو امر یکہ اورافغان طالبان کے درمیان امن معاہدے پر دستخط ہو جائیں گے۔ گزشتہ ہفتے روزنامہ ”پاکستان“ کے واشنگٹن بیورو نے محکمہ خارجہ کے ذرائع کے حوالے سے سب سے پہلے 29فروری کو معاہدے پر دستخط ہونے کی بریکنگ نیوز دی تھی۔ امریکی وزیر خارجہ اسوقت سعودی عرب کے دورے پر ہیں جہاں وہ سعودی قیادت سے ایران، یمن اور انسانی حقوق کے امور پر بات چیت کررہے ہیں۔ آج وہ عمان روانہ ہو نگے۔ اس دوران یہاں واشنگٹن میں وزیر خارجہ کی طرف سے محکمہ خارجہ نے ایک بیان جاری کیا ہے جس میں انہوں نے بتایا ہے کہ قطر کے دارالحکومت دوحہ میں امریکہ اور طالبان کے مذاکرات کاروں کے درمیان ایک ”انڈر سٹینڈنگ“ ہو چکی ہے جس کے نتیجہ میں دونوں فر یق افغان جنگ کوختم کرنے کیلئے ایک سیاسی سمجھوتہ طے کرنے کیلئے تیار ہو جائیں گے۔ 29 فروری کو جس معاہدے پر دستخط ہونے جارہے ہیں اس کی شقوں کے مطابق امریکہ اور اس کے اتحادیوں کی افواج میں جو اس وقت افغانستان میں موجود ہیں نمایاں کمی کردی جائیگی اور اس امر کو یقینی بنایا جائے گاکہ کوئی دہشت گرد کبھی امریکہ اور اس کے اتحادیوں کیخلاف کارروائی کرنے کیلئے افغانستان کی سرزمین استعمال نہیں کرسکے گا۔ امریکی وزیر خارجہ کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ طالبان کیساتھ ہونیوالے مفاہمت کے عمل میں کابل انتظامیہ کو بھی مشور ے میں شامل کیا گیا ہے۔ امریکی وزیرخارجہ نے کہا ہے طالبان کیساتھ جو مفاہمت پیدا ہوئی ہے اس پر کامیاب عملدرآمد کرنے کے نتیجے میں 29 فروری کو ایک باقاعدہ معاہدے پر دستخط ہونے جارہے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ افغان جنگ کے خاتمے کیلئے پہلے مرحلے کے طور پر 29 فروری کو امریکہ اور طالبان کے درمیان معاہدے پر دستخط ہوں گے۔ دوسرے مرحلے پر اس کے فوراً بعد افغان حکومت اور طا لبا ن سمیت افغان عوام کے تمام نمائندوں کے درمیان آپس میں بات چیت ہوگی۔ اس طرح ایک جامع اور مستقل جنگ بندی ہو سکے گی اور مستقبل میں افغانستان کے سیاسی روڈ میپ کی بنیاد رکھی جاسکے گی۔ امریکی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ چیلنجز یقینا ً درپیش ہیں تاہم دوحہ میں جو کامیابی حاصل ہوئی ہے اس سے بہت امید بندھی ہے جو سب کیلئے ایک حقیقی موقع ہے۔ امن معاہدے کے بعد انٹرا افغان مذاکرات ہونگے، معاہدے سے پہلے طالبان پرُ تشدد کے واقعات میں کمی کریں گے،یہ امن کی طویل راہ پر ایک اہم قدم ہے، امن معاہدے کی باضابطہ تقریب دوحہ میں منعقد ہوگی جس میں عالمی ضمانت کار کے طور پر پاکستان، چین اور روس سمیت اقوام متحدہ کے اعلی حکام بھی شرکت کریں گے۔ مائیک پومپیو نے مزید کہا کہ میں تمام افغان کے باشندوں سے اس موقع سے فائدہ اٹھانے کا مطالبہ کرتا ہوں۔دوسری جانب افغان طالبان نے بھی امریکہ سے امن معاہدہ طے پانے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ معاہدے پر 29فروری کو باقاعدہ دستخط ہونگے۔

امریکہ اعلان

مزید : صفحہ اول