نواز شریف کی صحت پر میڈیکل بورڈ کا رائے دینے سے انکار، حکومت ممبران کو لندن بھجوانے کا فیصلہ

نواز شریف کی صحت پر میڈیکل بورڈ کا رائے دینے سے انکار، حکومت ممبران کو لندن ...

  



لاہور(جاوید اقبال) مسلم لیگ (ن) کے قائد میاں نواز شریف کی ضمانت میں توسیع کے حوالے سے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کی بریفنگ اور طبی رپورٹس پر پنجاب حکومت کے میڈیکل بورڈ نے کسی قسم کی ذمہ داری لینے سے انکار کر دیا،ذرائع کے مطابق پنجاب حکومت نے میڈیکل بورڈ کے ممبران کو نواز شریف کے معائنہ کیلئے لندن بھجوانے کا فیصلہ کر لیا۔ذرائع کے مطابق کمیٹی کے سربراہ نے میڈٖیکل بورڈ کے اراکین سے دریافت کیا کہ وہ اپنی رائے دیں کہ موجودہ رپورٹس کی روشنی میں میاں نواز شریف بیمار ہیں؟ ذرائع کے مطابق میڈیکل بورڈ نے موقف اختیار کیا کہ وہ ان رپورٹس پر اپنی رائے دینے سے معذرت خواہ ہیں۔ ذرائع نے کہا کہ نوز شریف کی صحت پر حتمی فیصلے کیلئے کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ میڈیکل بورڈ کو لندن بھجوایا جائے گا جس کیلئے کمیٹی وزیر اعلیٰ پنجاب کو سفارش کرے گی۔ذرائع کا دعویٰ ہے کہ میڈیکل بورڈ کے سربراہ پرفیسر محمود ایاز اور دیگر ممبران جن میں پی آئی سی کے سربراہ پروفیسر ثاقب شفیع شیخ،آغا خان کراچی کے ڈاکٹر اور شوکت خانم کے سی ای او ڈاکٹر فیصل سلطان سمیت 5 ڈاکٹرز میاں نواز شریف کے معائنہ کے لیے لندن جا سکتے ہیں جس کا قوی امکان ہے کیونکہ بورڈ نے کمیٹی پر واضح کر دیا ہے کہ وہ ہی ڈاکٹرز رپورٹ دے سکتے ہیں جو ان کا علاج کر رہے ہیں جس نے مریض کو دیکھا ہو گا۔

انکار

مزید : صفحہ اول