میاں نوازشریف لندن میں زیر علاج لیکن ان کی طبیعت میں کیا بہتری آئی ؟ لیگی رہنما عطاءاللہ تارڑ نے واضح کردیا

میاں نوازشریف لندن میں زیر علاج لیکن ان کی طبیعت میں کیا بہتری آئی ؟ لیگی ...
میاں نوازشریف لندن میں زیر علاج لیکن ان کی طبیعت میں کیا بہتری آئی ؟ لیگی رہنما عطاءاللہ تارڑ نے واضح کردیا

  



لاہور (ویب ڈیسک) مسلم لیگ نواز کے رہنما عطاءاللہ تارڑ نے کہا ہے نواز شریف کی صحت میں کوئی بہتری نہیں آئی، ان کے سات میں سے دو سٹنٹ کام کرنا چھوڑ گئے ہیں۔ ضروری ہے کہ سابق وزیراعظم کا پہلے دل کا علاج کرایا جائے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب سول سیکرٹیریٹ میں میاں نواز شریف کی درخواست ضمانت کے حوالے سے اجلاس ہوا جس کی صدارت وزیر قانون راجہ بشارت نے کی۔ عطاءاللہ تارڑ کی جانب سے کمیٹی کو بریفنگ دی گئی۔اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو میں عطاءاللہ تارڑ کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کی موجودہ صحت کی صورتحال سے کمیٹی کو آگاہ کر دیا ہے۔ دیگر امراض کے علاج سے پہلے انتہائی ضروری ہے کہ ان کا دل درست حالت میں ہو۔

عطاءاللہ تارڑ کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کی حالیہ میڈٰیکل رپورٹس کے مطابق ان کے 2 سٹنٹس کام نہیں کر رہے۔ ہم نے اس سلسلے میں کمیٹی کو تفصیلی بریفنگ دے دی ہے۔لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ میاں نواز شریف کے گردے بھی متاثر ہوئے ہیں۔ ہم نے ان کے طبی معالج ڈاکٹر ڈیوڈ لارنس کی رپورٹس کمیٹی کو جمع کروا دی ہیں۔ پلیٹ لیٹس اور دیگر امراض کا علاج بعد میں کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہبورڈ نے بریفنگ لے لی ہے، ہم مثبت جواب کیلئے پرامید ہیں۔ ڈاکٹر ڈیوڈ لارنس کے مطابق جب تک علاج مکمل نہیں ہوگا، نواز شریف وطن واپس نہیں آ سکیں گے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور