پسند کی شادی پر نوجوان لڑکی قتل، گھر والوں نے لاش کہاں پھینکی اور کتنے دن بعد واردات کا پتا چلا؟ رونگٹے کھڑے کردینے والی تفصیلات

پسند کی شادی پر نوجوان لڑکی قتل، گھر والوں نے لاش کہاں پھینکی اور کتنے دن بعد ...
پسند کی شادی پر نوجوان لڑکی قتل، گھر والوں نے لاش کہاں پھینکی اور کتنے دن بعد واردات کا پتا چلا؟ رونگٹے کھڑے کردینے والی تفصیلات

  



نئی دلی (ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارت کے دارالحکومت نئی دلی میں 25 سالہ لڑکی کو غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا ، پولیس نے گھر کے 6 افراد کو قتل کے الزام میں گرفتار کرلیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق نیو اشوک نگر کی 25 سالہ لڑکی شیتل چوہدری کا گزشتہ تین برس سے اپنے پڑوسی سے معاشقہ تھا، دونوں نے اکتوبر 2019 میں گھر والوں سے چھپ کر شادی کرلی ۔ لڑکی کے گھر والوں کو اپنی بیٹی کی پسند کی شادی منظور نہیں تھی جس کے باعث انہوں نے 30 جنوری کی رات گلا دبا کر اسے قتل کردیا اور اس کی لاش کو علی گڑھ کی نہر میں پھینک دیا۔

30 جنوری کو شیتل کے شوہر نے اس کے موبائل پر کال کی تو آگے سے کوئی جواب نہیں آیا جس کی وجہ سے اس کی تشویش میں اضافہ ہوا اور اس نے پولیس کو رپورٹ درج کرادی۔ پولیس نے لڑکی کے اہلخانہ سے تفتیش کی تو انہوں نے یہ کہہ کر ٹال دیا کہ لڑکی کسی رشتے دار کے گھر گئی ہوئی ہے۔ پولیس نے گھر والوں کے بتائے ہوئے ایڈریس پر پتا کیا تو لڑکی وہاں بھی موجود نہیں تھی جس کے بعد گھر والوں کے موبائل فونز کے ریکارڈ نکالے گئے۔

پولیس نے ان نمبروں کی نشاندہی کی جن پر سب سے زیادہ بار کالز کی گئی تھیں جس کے بعد تفتیش کو نئے سرے سے شروع کیا گیا ، پہلے پہل تو لڑکی کے گھر والے پولیس کو چکمہ دیتے رہے لیکن پھر انہوں نے سب کچھ اگل دیا اور ساری تفصیلات بتادیں۔

پولیس نے شیتل کے قتل کے الزام میں لڑکی کے والد رویندر، ماں سمن ، چچا سنجے، اوم پرکاش، پھوپھی زاد بھائی پرویش اور داماد انکت کو گرفتار کرلیا ہے۔

مزید : جرم و انصاف