گذشتہ ایک سال کے دوران افغانستان میں کتنےشہری ہلاک ہوئے؟اقوام متحدہ نے ہولناک اعداد و شمار جاری کر دیئے

گذشتہ ایک سال کے دوران افغانستان میں کتنےشہری ہلاک ہوئے؟اقوام متحدہ نے ...
گذشتہ ایک سال کے دوران افغانستان میں کتنےشہری ہلاک ہوئے؟اقوام متحدہ نے ہولناک اعداد و شمار جاری کر دیئے

  



کابل(ڈیلی پاکستان آن لائن) افغانستان میں اقوام متحدہ کے امدادی مشن (یو این اے ایم اے) نے آج جاری ہو نے والی رپورٹ میں کہا ہے کہ 2019کے دوران جنگ ذدہ  افغانستان میں 10ہزار سے زائد شہری حادثات کا شکار ہوئے جن میں سے 34 سو قتل ہوئے۔

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ افغان تنازعہ میں فریقین نے 10 ہزار سے زیادہ شہریوں کو ہلاک و زخمی کیاجن میں سے34 سو3شہری ہلاک اور6ہزار 9سو 89 شہری زخمی ہوئے، زیادہ تر شہری ہلاکتیں حکومت مخالف عناصر کی جانب سے کی گئیں ہیں۔رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ یہ مسلسل چھٹا سال ہے جب حادثات کا شکار ہو نے والے شہریوں کی تعداد 10 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔اس رپورٹ کا اجرا ایسے وقت میں کیا گیا ہے جب ہفتہ سے 7 یوم کے لئے تشدد میں کمی کا آغاز ہوا ہے۔سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ کے نمائندہ خصوصی برائے افغانستان اور یو این اے ایم اے کے سربراہ تادامیچی یاماموتو نے کہا ہے کہ لگ بھگ افغانستان کا کوئی بھی ایسا شہری نہیں جو جاری پر تشدد واقعات سے متاثر ہونے سے بچا ہو۔تمام فریقین کیلئے ضروری ہے کہ وہ لڑائی کو روکنے کیلئے ہر لمحے کو برائے کار لائیں کیونکہ امن طویل عرصے سے تاخیر کا شکارہے، شہریوں کی زندگیوں کا تحفظ یقینی بنایا جائے اور امن کی خاطر کوششوں کو جاری رکھا جائے۔

رپورٹ میں فریقین سے شہری ہلاکتیں روکنے کامطالبہ کیا گیا ہے۔اقوام متحدہ انسانی حقوق کی ہائی کمشنر مشعل بیچلیٹ نے کہا ہے کہ جنگجوں کو خواتین، مردوں، لڑکوں اور لڑکیوں کی بم، گولوں، راکٹوں اور دیسی ساختہ بارودی سرنگوں سے ہلاکتوں کو روکنے کیلئے اقدامات اٹھانے چاہئیں۔

مزید : بین الاقوامی