ای سگریٹ‘ ویپنگ‘ نکوٹین و تمباکو پر پابندی عائد کرنیکا مطالبہ

ای سگریٹ‘ ویپنگ‘ نکوٹین و تمباکو پر پابندی عائد کرنیکا مطالبہ

  

پشاور(سٹی رپورٹر) تمباکو کا استعمال دنیا بھر میں اموات کی ایک بڑی وجہ ہے پاکستان میں تمباکو سے سالانہ 160,100 سے زیادہ افراد ہلاک ہو جاتے ہیں۔ فریم ورک کنونشن فار ٹوبیکو کنٹرول (ایف سی ٹی سی) اپنے رکن ممالک پر زور دیتا ہے کہ وہ تمباکو کنٹرول کے لیے طویل مدتی پائیدار حکمت عملی اپنائیں۔ وزارت صحت حکومت پاکستان اور تمباکو کنٹرول سیل (TCC) انسدادِ تمباکو کے لیے بہتر اقدامات اٹھا رہے ہیں لیکن اس کے ساتھ ساتھ تمباکو اندسٹر ی نئی مصنوعات جیسے ای –سگریٹ، ویپنگ اور منہ میں رکھنے والے تمباکو کو، انٹرنیٹ، پرنٹ میڈیا کے ذریعے متعارف کروا کر مارکیٹ میں داخل ہو رہی ہے جس کا موجودہ نشانہ نوجوان اور خواتین ہیں۔ تمباکو انڈسٹری اپنے فرنٹ گروپس کے ذریعے یہ پراپیگنڈہ کرنے میں مشغول ہے کہ نئی تمباکو مصنوعات جیسے ای سگریٹ وغیرہ نقصان دہ نہیں ہیں لیکن حقیقت اس کے برعکس ہے تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ یہ مصنوعات، روایتی تمباکو مصنوعات کی طرح ہی خطرناک ہیں۔اس سنگین مسئلہ کو بھانپتے ہوئے، سول سوسائٹی حکومت پر زور دیتی ہے کہ حکومت ان نئی تمباکو مصنوعات کو مارکیٹ میں پوری طرح پھیلنے سے پہلے ہی اس پر پابندی عائد کر نے کے لئے سنجیدہ اقدامات کرے تاکہ ہمارے نوجوانوں اور خواتین اس لت میں مبتلا ہونے سے بچ سکیں۔ ہم حکومت سے پر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ تمباکو صنعت کی سرگرمیوں پرنظر رکھے جو اپنی مصنوعات میں جدت لا رہی ہے تاکہ ان کی آمدنی میں اضافہ ہو۔ ستم ظریفی یہ ہے کہ تمباکو کی صنعت کے فرنٹ گروپس نئی تمباکو مصنوعات کی مارکیٹنگ میں شامل ہیں۔ وہ ڈبلیو ایچ او کے نعرے ''تمباکو نوشی چھوڑو'' کی آڑ میں عوام کو بلاگ اور مضامین وغیرہ لکھ کر گمراہ کر رہے ہیں۔ذیشان دانش، پراجیکٹ کوآرڈینیٹر، سوسائٹی فار آلٹرنیٹو میڈیا اینڈ ریسرچ، نے نئی تمباکو مصنوعات ای سگریٹ وغیرہ پر مکمل پابندی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ایک جامع، مستحکم اور خود انحصار نیشل ٹو بیکو کنٹرول پالیسی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ ہم تمباکو کے بلاضرورت استعمال کی وجہ سے عوامی صحت کے بجٹ پر بوجھ کو کم کرنے اور عوام کی زندگی اور صحت کو بچانے کے لیے تمباکو کے استعمال پر قابو پانے کے لیے پاکستان کی وفاقی،صوبائی اور ضلعی حکومتوں کی ہر ممکن مدد کرنے کیلئے تیار ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -