آدمی نے 500 ڈالر کا کھانا کھا کر ویٹرس کو 10 ہزار ڈالر ٹپ دے دی

آدمی نے 500 ڈالر کا کھانا کھا کر ویٹرس کو 10 ہزار ڈالر ٹپ دے دی
آدمی نے 500 ڈالر کا کھانا کھا کر ویٹرس کو 10 ہزار ڈالر ٹپ دے دی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کنبرا(مانیٹرنگ ڈیسک) آسٹریلیا میں ایک اجنبی شخص نے ہوٹل پر 500آسٹریلوی ڈالر (تقریباً90ہزار روپے)کا کھانا کھایا اور حیران کن طور پر ویٹرس کو 10ہزار ڈالر (تقریباً 17لاکھ 87ہزار روپے) بطور ٹپ دے دیئے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ واقعہ آسٹریلوی شہر میلبرن کے علاقے ساﺅتھ ییرا میں واقعہ گیلسن نامی ریسٹورنٹ میں پیش آیا۔
اس کسٹمر کو جس ویٹرس نے سروس دی ، طالبہ ہے اور پارٹ ٹائم بطور ویٹرس ملازمت کرتی ہے۔ اتنی بڑی رقم بطور ٹپ دیکھ کر ویٹرس دنگ رہ گئی اور اس آدمی کو بتایا کہ ریسٹورنٹ پر تمام ویٹرز ٹپ آپس میں تقسیم کرتے ہیں، تاہم اس آدمی نے اصرار کیا کہ اس رقم میں سے 70فیصد اس ویٹرس کو دیا جائے اور باقی تمام عملے میں تقسیم کی جائے۔
رپورٹ کے مطابق اس شخص نے کہا کہ اگر ویٹرس کو 70فیصد رقم دی جائے گی، تبھی وہ یہ رقم بطور ٹپ دے گا ورنہ نہیں دے گا۔مقامی اخبار ہیرالڈ سن سے گفتگو کرتے ہوئے ہوٹل کے سٹاف کا کہنا ہے کہ اس کسٹمرکی یہ بات سن کر ویٹرس کی آنکھوں میں آنسو آ گئے۔ 
7نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے ویٹرس نے بتایا کہ جب کسٹمر نے ٹپ کی رقم لکھی تو مجھے اپنی آنکھوں پر یقین نہ آیا۔ میں نے تصحیح کے لیے کسٹمر سے پوچھا کہ شاید آپ ایک یا دو صفر زیادہ لگا بیٹھے ہیں، تاہم جب کسٹمر نے کہا کہ یہ غلطی نہیں ہے بلکہ اس نے واقعی اتنی بڑی رقم بطور ٹپ دی ہے تو میری حیرت کی انتہاءنہ رہی۔
رپورٹ کے مطابق کہا جا رہا ہے کہ اتنی زیادہ ٹپ دینے والا یہ کسٹمر نوجوان کرپٹو کرنسی اونٹرپرینور ہے، جس کے پاس 12کروڑ ڈالر مالیت کے دو عالیشان بنگلے اور کئی لگژری گاڑیاں ہیں۔اس کے اصرار پر 7ہزار ڈالر کی رقم ویٹرس کو دی گئی جبکہ 3ہزار ڈالر سٹاف کے باقی تمام 22افراد میں برابر تقسیم کیے گئے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -