بشریٰ بی بی کی بنی گالا سے اڈیالہ جیل منتقلی، سپرنٹنڈنٹ نے رپورٹ جمع کروادی

بشریٰ بی بی کی بنی گالا سے اڈیالہ جیل منتقلی، سپرنٹنڈنٹ نے رپورٹ جمع کروادی
بشریٰ بی بی کی بنی گالا سے اڈیالہ جیل منتقلی، سپرنٹنڈنٹ نے رپورٹ جمع کروادی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اڈیالہ جیل کے حکام نے اسلام آباد ہائیکورٹ کو بتایا ہے کہ سیکیورٹی وجوہات کی بنا پر توشہ خانہ ریفرنس اور غیر شرعی نکاح کیس میں سزا یافتہ بشریٰ بی بی کو سب جیل بنی گالہ سے سینٹرل جیل اڈیالہ منتقل نہیں کر سکتے۔ عدالت نے چیف کمشنر اسلام آباد کی جانب سے جواب داخل کروانے کیلئے مہلت کی استدعا پر سماعت 2 ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے سب جیل قرار دی گئی بنی گالہ رہائش گاہ سے بشریٰ بی بی کی اڈیالہ جیل منتقلی کی درخواست پر سماعت کی۔توشہ خانہ ریفرنس اور عدت کے دوران نکاح کیس میں سزا یافتہ بشریٰ بی بی کی جانب سے محمد عثمان ریاض گل ایڈووکیٹ عدالت میں پیش ہوئے۔

دوران سماعت سپرنٹنڈنٹ اڈیالہ جیل نے اپنی رپورٹ عدالت میں جمع کروائی جس میں کہا گیا کہ سیکیورٹی وجوہات کی بنا پر بشریٰ بی بی کو جیل منتقل نہیں کر سکتے، جیل میں جگہ کم ہے۔ پہلے ہی 250 خواتین جیل میں قید ہیں۔ سماعت کے دوران چیف کمشنر اسلام آباد کی جانب سے جواب جمع نہ کروایا جا سکا۔ سرکاری وکیل نے چیف کمشنر اسلام آباد کی جانب سے جواب داخل کروانے کیلئے مہلت کی استدعا کر دی۔ عدالت نے استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت 2 ہفتوں کیلئے ملتوی کر دی۔

مزید :

قومی -