یورپ میں صنفی مساوات کے حوالہ سے پیش رفت سست روی کا شکار ہے،یورپی پارلیمنٹ کی رپورٹ

یورپ میں صنفی مساوات کے حوالہ سے پیش رفت سست روی کا شکار ہے،یورپی پارلیمنٹ کی ...

 برسلز (اے پی پی) یورپ میں صنفی مساوات کے حوالہ سے پیش رفت گزشتہ 5 سال سے انتہائی سست روی کا شکار ہے اوراگر یہی صورتحال رہی تو رواں صدی کے اواخر تک بھی مرد اور خواتین ملازمین کی تنخواہیں برابر کی سطح پر نہیں لائی جاسکیں گی۔ یہ بات یورپی پارلیمنٹ کی طرف سے جاری ہونے والی ایک رپورٹ میں میں کہی گئی۔ یورپی پارلیمنٹ میں الائنس آف سوشلٹس اینڈ ڈیموکریٹس کے اہم رکن مارک ٹرابیلا نے رپورٹ کے اجراء کے موقع پر کہا کہ 5 سال قبل یورپ میں ملازمت پیشہ خواتین کا تناسب 60 فیصد تھا جو اب 63 فیصد ہے۔ انہوں نے کہاکہ صنفی مساوات کا دعوی کرنے والے دنیا کے حصہ میں یہ اضافہ نہ ہونے کے برابر ہے۔ انہوں نے کہاکہ ملازمت پیشہ خواتین کی بڑی تعداد بھی عارضی اور جزوقتی ملازمتیں کررہی ہے اورانھیں مردوں کی باقاعدہ ملازمتوں کی طرح تحفظ حاصل نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ گھریلو تشدد آج بھی خواتین کا ایک بڑا مسئلہ ہے ۔ انہوں نے کہاکہ صنفی مساوات کا مطلب مردوں اور خواتین کو مساوی حقوق اور مواقع فراہم کرتا ہے ورنہ مردوخواتین کئی حوالوں سے کبھی بھی ایک دوسرے کے برابر نہیں ہوسکتے۔

مزید : عالمی منظر


loading...