ایم بی بی ایس ڈاکٹرز عطائیوں کے سرپرست بن گئے

ایم بی بی ایس ڈاکٹرز عطائیوں کے سرپرست بن گئے

                                         لاہور(جاوید اقبال) صوبائی دارالحکومت میں کوالیفائیڈ ایم بی بی ایس ڈاکٹرز شہر بھر میں ہزاروں جعلی اور عطائی ڈاکٹروں کے سرپرست بن گئے ہیں جنہوں نے عطائی اور جعلی ڈاکٹروں کے کلینکس پر اپنے ناموں سے بورڈز آویزاں کر دیئے ہیں جہاں ڈاکٹرز اپنا نام ماہانہ بنیادوں پر فروخت کر رہے ہیں جس کا ڈرگ کورٹ لاہور کے چیئرمین حج چودھری محمد جہانگیر نے سخت نوٹس لے لیا ہے اور ایسے ایم بی بی ایس ڈاکٹروں کے خلاف بلاتاخیر کارروائی کے لئے ای ڈی او ہیلتھ چیف ڈرگ انسپکٹر ڈرگ انسپکٹروں کو ہدایت جاری کر دی ہیں ڈرگ کورٹ کے جج چودھری محمد جہانگیر نے لاہور ڈویژن کے ای ڈی اوز چیف ڈرگ کنٹرولر ڈاکٹرذکاءالرحمن سیکرٹری صوبائی کوالٹی کنٹرول بورڈ کو عدالت میں طلب کر کے ان کی زبردست انداز میں سرزنش کی اور انہیں کہا کہ فی الفور ایسے ایم بی بی ایس اور سینئر ڈاکٹروں کے خلاف کریک ڈاﺅن کریں جو جعلی عطائی ڈاکٹروں کی نہ صرف سرپرستی کر کے عطائیت کو فروغ دینے کا باعث بن رہے ہیں بلکہ عطائی ڈاکٹروں کے کلینکس پر آویزاں کئے گئے بورڈز پر اپنا نام تحریر کرا کر ان سے ماہانہ پیسے وصول کرتے ہیں اور موقع پر نہیں جاتے جج نے اس بات کا بھی سخت نوٹس لیا کہ شہر میں جگہ جگہ کھلی ہوئی کلینیکل لیبارٹریوں جن کو چلانے کے لئے مختلف پیتھالوجسٹس نے اپنے نام اور اسناد دے رکھی ہیں۔ بتایا گیا تھا کہ ایم ایم بی بی ایس ڈاکٹرزعطائیوں کی سرپرستی کر رہے ہیں ان ڈاکٹروں نے جعلی ڈاکٹروں کو اپنی اسناد اور نام دے رکھے ہیں چھاپے پڑنے پر ایم بی بی ایس ڈاکٹرز میدان میں آ جاتے ہیں اور اپنی اسناد پیش کر کے جعلی ڈاکٹروں کو بچا لیتے ہیں جس کا ڈرگ کورٹ کے چیئرمین نے سخت نوٹس لیتے ہوئے ایسے ڈاکٹروں کے خلاف قانونی کارروائی ہنگامی بنیادوں پر شروع کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں اس حوالے سے ای ڈی او ہیلتھ ڈاکٹر ذوالفقار علی چودھری سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ یہ بات سچ ہے کہ شہر میں عطائیت کے فروغ کی بڑی وجہ وہ ایم بی بی ایس ڈاکٹرز ہیں جو جعلی ڈاکٹروں کے کلینکس پر ڈیوٹی نہیں دیتے مگر انہوں نے ان کے بورڈز پر اپنے نام آویزاں کرا رکھے ہیں ایسے ڈاکٹروں کی تفصیلات جمع کی جا رہی ہیں جلد کریک ڈاﺅن شروع ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...