لاہور کینال، شہر کا حُسن مگر کیسے؟

لاہور کینال، شہر کا حُسن مگر کیسے؟

صوبائی وزیر آبپاشی یاور زمان نے لاہور کینال کو شہر کا حُسن قرار دیا اور بتایا ہے کہ وزیراعلیٰ میاں محمد شہباز شریف کی ہدایت پر نہر کو زیادہ سے زیادہ خوبصورت بنایا جا رہا ہے اور نہر کے کنارے پختہ کئے جا رہے ہیں۔ وزیر موصوف کے ارشادات بالکل درست ہیں اور یہ بھی بالکل صحیح ہے کہ نہر کے کنارے پختہ کرنے کا کام شروع ہے۔ یہ قابل تحسین قدم ہے، لیکن نہر کی خوبصورتی کے تحفظ اور اسے بہتر بنانے کے لئے متعلقہ محکمے پوری توجہ نہیں دے رہے۔

لاہور کینال کی تعریف تو بیرون ممالک سے بھی آنے والے کرتے ہیں، لیکن ہم نے اس کی تزئین سے اغماض برتا اور اب بھی پوری توجہ اور مکمل منصوبہ بندی سے کام نہیں ہو رہا۔کنارے اور نہر کے اندرونی دونوں بازو پختہ کرنے ہی سے حُسن بحال اور برقرار نہیں ہو گا، کیونکہ اور بھی بہت سے عمل مقصود ہیں، کنارے پر ایستادہ کمزور درختوں کی جگہ نئے درخت لگانے، نہر کو آلودگی سے بچانے اور اس کی گہرائی کو کم کرنے سے روکنا بھی ضروری ہے۔ مغلپورہ سے جلو تک نہر میں سیوریج ڈالے گئے جو اب تک ختم نہیں کئے جا سکے۔ گوالا کالونی کے اردگرد بھینسیں نہر میں نہاتی ہیں،جبکہ اِن دِنوں بھل صفائی ہونے والی ہے یہ عمل بھی لاپرواہی سے ہوتا ہے، کناروں کی مٹی نہر کے اندر ڈال دی جاتی ہے اسے منتقل نہیں کیا جاتا، جس سے نہر کی گہرائی کم ہوتی چلی جا رہی ہے، اسے خوبصورت بنانا ہے، تو اِن تمام پہلوؤں پر کام کرنا لازمی ہے۔

مزید : اداریہ


loading...