حکومت کا چیئرمین اوگرا اور ممبران کی بر طرفی کا فیصلہ

حکومت کا چیئرمین اوگرا اور ممبران کی بر طرفی کا فیصلہ

                         لاہور(صبغت اللہ چودھری)حکومت نے پٹرول بحران کی تمام ذمہ داری اوگرا پر ڈالنے کے بعد آئل اینڈگیس ریگولیٹری اتھارٹی کے چیئرمین اور ممبران کی برطرفی کا فیصلہ کر لیا ہے لیکن قانون میں چیئرمین اوگراکو عہدے سے فارغ کرنے کا کوئی طریقہ کارہی موجود نہیں ہے ۔تاہم اوگرا کے ممبران کو فیڈرل پبلک سروس کمیشن کے ذریعے انکوائری کے بعد مس کنڈکٹ اور ذہنی یا جسمانی معذوری کی بناءپر ہٹایا جا سکتا ہے۔آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کے قانون کے تحت چیئرمین اور ممبران کیلئے عمر کی زیادہ سے زیادہ حد مقرر ہے اور 65 سال ان کی ریٹائرمنٹ کی عمر مقرر کی گئی ہے۔ چیئرمین اوگرا کاچار سال کیلئے تقرر کیا جاتا ہے یہ مدت پوری ہونے کے بعد انہیں دوبارہ بھی اس عہدے پر تعینات کیا جا سکتا ہے ۔ تاہم اگر وہ عہدے کی معیاد پوری ہونے سے قبل 65 برس کی عمر کو پہنچ جائیں تو وہ ریٹائرڈ تصور کئے جائیں گے۔اوگرا کے قیام سے متعلق قانون باب دوئم کی شق 8کے تحت چیئرمین کے عہدے کی معیاد چار سال ، ممبر آئل اور ممبر گیس کے عہدے کی معیار 3 سال اور ممبر فنانس کے عہدے کی معیاد دو سال مقرر کی گئی ہے۔علاوہ ازیں چیئرمین اور ممبران کے تقرر کی اہلیت کی شرائط بھی الگ الگ مقرر کی گئی ہیں۔ قانون میں یہ بھی واضح کیا گیا ہے کہ حکومت آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی کا قیام عمل میں لائیگی جو ایک چیئرمین اور تین ایڈیشنل ممبروں پر مشتمل ہوگی ۔ ان قانونی شقوں سے واضح ہوتا ہے کہ چیئرمین اور ممبر الگ الگ عہدے ہیں، قانون کی شق 11 میں واضح کیا گیا ہے کہ کوئی بھی ممبر اپنے عہدے سے استعفا دے سکتا ہے یا پھر فیڈرل پبلک سروس کمیشن سے انکوائری کے بعد اگر ثابت ہو جائے کہ متعلقہ ممبر ذہنی یا جسمانی طور پر معذور ہے اور اپنی ذمہ داریاں پوری کرنے کے قابل نہیں یا پھر وہ مس کنڈکٹ کا مرتکب ہوا ہے تو اسے فارغ کیا جا سکتا ہے۔ اس یا کسی دیگر شق میں چیئرمین کی برطرفی کا طریقہ کار موجود نہیں ہے تاہم اگر چیئرمین اور ممبر کی برطرفی کا ایک ہی طریقہ کار تصور کر لیا جائے تو بظاہر قانون میں ابہام ہے کیونکہ چیئرمین اور ممبران کی تقرری ، معیاد ملازمت، اہلیت اور اختیارات کا الگ الگ تعین کیا گیا ہے پھر ان کی برطرفی کے طریقہ کار کو ایک ہی کیسے مانا جا سکتا ہے۔جبکہ ریٹائرمنٹ سے متعلق واضح کیا گیا ہے کہ چیئرمین اور ممبران کی ریٹائرمنٹ کی عمر 65 سال ہوگی ، برطرفی سے متعلق دیگر کسی شق میں ممبران کے ساتھ چیئرمین کا لفظ موجود نہیں۔یوں چیئرمین کی برطرفی کے حوالے سے اس قانون میں ایک بڑا ابہام پایا جاتا ہے۔متعلقہ قانون میں یہ بھی واضح کر دیا گیا ہے کہ اوگرا ایک آزاد اور خود مختار ادارہ ہوگایہی وجہ ہے کہ اس کے چیئرمین اور ممبران کی ملازمتوں کو قانونی تحفظ دیا گیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...