جعلی کاغذات پر بینک سے 6 کروڑ 75 لاکھ قرض لینے والے ملزم کی درخواست ضمانت خارج

جعلی کاغذات پر بینک سے 6 کروڑ 75 لاکھ قرض لینے والے ملزم کی درخواست ضمانت خارج

  



لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہورہائیکورٹ نے جعلی کاغذات پر بنک سے قرض حاصل کرنے والے ملزم محمود انورزبیری کی جانب سے دائردرخواست ضمانت خارج کر دی۔ جسٹس محمد قاسم خان کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے 6 کروڑ 75 لاکھ روپے کے نادہندہ شادباغ کے رہائشی محمود انورزبیری کی درخواست ضمانت پر سماعت کی۔ ملزم کے وکیل نے موقف اختیارکیا کہ ملزم نے دو ہزار آٹھ میں شاہ عالم مارکیٹ میں موجود دکانوں کو عسکری بینک میں رہن رکھ کر پونے سات کروڑ روپے کا قرض لیااور برقت قرضہ واپس نہیں کرسکا ، نیب نے عسکری بنک کی درخواست پر ملزم کو یکم فروری دوہزارتیرہ سے غیر قانونی طورپر گرفتارکررکھا ہے جبکہ بنکنگ کورٹ نے بھی شاہ عالم مارکیٹ میں دکانوں کی مالیت کے حوالے سے ڈگری کا فیصلہ اس کے حق میں کیا ہواہے۔ عدالت میں ایڈیشنل ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل نیب سید رضابخاری نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ملزم نے بنک کے افسروں سے ملی بھگت کر کے شاہ عالم میں واقع کم مالیت کی دکانوں کی مارکیٹ ویلیو زیادہ لگوا کر قرضہ حاصل کیا۔ عسکری بنک کی درخواست پر ملزم محمود انورزبیری کو نیب نے گرفتارکرکے اس کیخلاف ریفرنس احتساب عدالت لاہورمیں دائر کر رکھاہے۔ ملزم نے عسکری بنک کے ساتھ 6 کروڑ 75 لاکھ روپے کا فراڈکیا لہٰذا ملزم کی درخواست ضمانت خارج کی جائے، عدالت نے فریقین کے دلائل سننے اور ریکارڈ دیکھنے کے بعد ملزم کی درخواست ضمانت خارج کردی۔

مزید : صفحہ آخر


loading...