قوم کو ذہنی طور پر دہشت گردوں کیخلاف جنگ کیلئے تیار رہنا ہو گا، سیاسی رہنما

قوم کو ذہنی طور پر دہشت گردوں کیخلاف جنگ کیلئے تیار رہنا ہو گا، سیاسی رہنما

لاہور( نمائندہ خصوصی) پیپلزپارٹی کے سینیٹر جہانگیر بدر نے کہا ہے کہ افواج پاکستان جرات اور بہادری کے ساتھ دہشت گردوں کا خاتمہ کررہی ہے دہشت گردوں کا کوئی مذہب نہیں ہو تا انہوں نے ترقی پذیر ملک کو برباد کر کے رکھ دیا ہے پوری قوم کو ذہنی طور پر دہشت گردو ں کے خلاف جنگ کیلئے تیار رہنا ہوگا ۔ان خیالات کا اظہار انہوں گزشتہ روز لاہور پریس کلب کے زیر اہتمام شہید اعتزاز حسن اور سانحہ پشاور کے شہداء کو خراج تحسین پیش کرنے کیلئے خصوصی طور پر منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس سیمینار میں شہید اعتزاز حسن کے والد مجاہد علی بنگش ان کے چچا‘آرمی پبلک سکول کے طلبہ اول حسین‘محمد طفیل ‘کامران حید ر‘میاں احمد ‘اے این پی کے مرکزی جنرل سیکرٹری احسان وائیں ‘مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق ‘پنجاب حکومت کے ترجمان سید زعیم حسین قادری ‘سیفما کے امتیاز عالم ‘سینئر صحافی سہیل وڑائچ‘ صدر لاہور پریس کلب ارشد انصاری ‘سیکرٹری پریس کلب افضال طالب ‘سابق سیکرٹری کلب شہباز میاں سمیت دیگر صحافیوں نے بھی شرکت کی۔پیپلزپارٹی کے سینٹر جہانگیر بدر نے کہا پیپلزپارٹی کی قیادت نے ضیاء دور میں کہہ دیا تھا کہ یہ دہشت گرد عالمی دنیا کیلئے بھی خطرہ ہیں مگر اس وقت کسی نے ہماری قیادت کی بات پر توجہ نہ دی جب 9/11کا واقعہ امریکہ میں رونما ہوا تو امریکہ کو بھی دہشت گردی کا احساس ہوا دہشت گرد آج ان لوگوں کے گھروں تک پہنچ چکے ہیں جو اس کے ذمہ دار تھے،شہید اعتزاز حسن اور آرمی پبلک سکول کے شہداء کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں اور افواج پاکستان کو بھی خراج تحسین پیش کرتے ہیں جو جرات اور حوصلہ مندی کے ساتھ دہشت گردوں کا خاتمہ کررہے ہیں ہماری فوج دنیا کی سب سے بہادر فوج ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کی طرف اٹھنے والا ہر قدم کاٹ دیا جائے گا دہشت گردوں نے ترقی پذیر ملک کو برباد کر کے رکھ دیا ہے لوگوں کی زندگیاں اجیرن ہوچکی ہیں پوری قوم کو ذہنی طور پر اب دہشت گردوں کے خلاف جنگ کیلئے تیار رہنا ہوگا قربانی کا جذبہ لے کر میدان میں اتر نا ہوگا۔عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری احسان وائیں نے کہا دہشت گردوں کو پالنے کا کاروبار سابق جنرل ضیاء الحق نے شروع کیا تھا جس کی وجہ سے آج تک معصوم شہری ان دہشتگردوں کا نشانہ بن رہے ہیں۔سیفما کے رہنما امتیاز عالم نے کہا لاہور میں ایسی تنظیمیں موجود ہیں جو دہشتگردوں کو سپورٹ کررہی ہیں اس وقت لاہور سے ہر سال پانچ سے چھ لاکھ بچے دہشتگردی کی تربیت حاصل کرنے کیلئے جارہے ہیں،جو لوگوں دہشتگردوں کی مدد کررہے ہیں حکومت کو معلوم ہے مگر حکومت ان لوگوں کے خلاف کوئی ایکشن نہیں لے رہی ہے ،مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق نے کہا سانحہ پشاور کے صدیوں تک نہیں بھلایا جا سکے گا اس قومی سانحہ نے پوری قوم کو متحد کردیا ہے ،دہشتگردوں کا کوئی دین نہیں ہے ،اپوزیشن کو دہشتگردی کے خاتمے کیلئے حکومت کا مکمل ساتھ دینا ہوگا ،ہمیں اپنے شہداء کی قربانیوں کا بھی اعتراف کرنا ہوگا ان کی قربانیاں رائیگاں نہیں جانئیں گی،ہمیں منفی سوچ سے باہر نکلنا ہوگا۔

مزید : صفحہ آخر


loading...