مکہ مکرمہ میں قائم عمارت کا دنیا میں منفرد اعزاز

مکہ مکرمہ میں قائم عمارت کا دنیا میں منفرد اعزاز
مکہ مکرمہ میں قائم عمارت کا دنیا میں منفرد اعزاز

  


ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) مکۃ المکرمہ اسلام کے مقدس ترین مقامات کی وجہ سے دنیا بھر میں شہرت رکھتا ہے مگر اس شہر کی ایک اور پہچان ’’ ابراج البیت‘‘ ہے جو دنیا کا بلند ترین کلاک ٹاور (گھڑی والا مینار) ہے اور دنیا کی تیسری بلند ترین عمارت ہے۔یہ ایک سرکاری عمارت ہے جسے ’’مکہ رائل ہوٹل کلاک ٹاور‘‘ بھی کہا جاتا ہے۔ جب 2012ء میں اس کی تعمیر مکمل ہوئی تو یہ تائیوان کی ’’تائپے 101‘‘ کے بعد دنیا کی دوسری بلند ترین عمارت تھی۔ اب دبئی کا ’’برج خلیفہ‘‘ اور چین کا ’’شنگھائی ٹاور‘‘ اس سے بلند عمارتیں ہیں اور اس کا نمبر تیسرا ہے۔ اس کی تعمیر سعودی بن لادن گروپ نے کی جو سعودی عرب کی سب سے بڑی تعمیراتی کمپنی ہے۔ یہ عمارت اسلام کے مقدس ترین مقام یعنی مسجد الحرام سے نہایت قریب واقع ہے اور اس کی یہاں تعمیر کافی متنازعہ مسئلہ رہی۔ اس جگہ پہلے سلطنت عثمانیہ کے دور میں بنایا گیا ’’قلعہ اجیاد‘‘ تھا اور جب کلاک ٹاور کی تعمیر کیلئے اس تاریخی قلعے کو منہدم کیا گیا تو ترکی کی طرف سے شدید احتجاج کیا گیا جبکہ آثار قدیمہ کے تحفظ کیلئے کام کرنے والے اداروں نے بھی اس بات پر احتجاج کیا تھا مگر منصوبہ حسب فیصلہ مکمل کیا گیا۔

مزید : صفحہ آخر


loading...