فیس میں اضافہ کے خلاف احتجاج کرنے والے طلباءکو پولیس نے تشدد کا نشانہ بنا ڈالا

فیس میں اضافہ کے خلاف احتجاج کرنے والے طلباءکو پولیس نے تشدد کا نشانہ بنا ...
فیس میں اضافہ کے خلاف احتجاج کرنے والے طلباءکو پولیس نے تشدد کا نشانہ بنا ڈالا

  


لاہور ( مانیٹرنگ ڈیسک ) سیکورٹی کے نام پر فیس بڑھانے کے خلاف گورنمنٹ اسلامیہ ہائی سکول کے طلباءنے احتجاج کیا جس میں پولیس نے انہیں تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے سیکورٹی مزید بہتر کرنے کے احکامات کے بعد گورنمنٹ اسلامیہ ہائی سکول نے فیس میں اضافہ کر دیا جس کے خلاف طلباءنے احتجاج کرتے ہوئے بھاٹی چوک روڈ بلاک کر دی۔پولیس نے انہیں منتشر کرنے کے لیے ان کو تشدد کانشانہ بنایا جس کے نتیجے میں متعد د طلباءزخمی ہو گئے۔

پٹرول بحران ، سی این جی سٹیشنز کو کھلا رکھنے کا حکم

واقعے کے بعد ڈی آئی جی آپریشنز ڈاکٹر حیدر اشرف نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ بچوں پر تشدد کرنا غلط بات ہے جبکہ اس واقعے میں ملوث اہلکاروں کے خلاف سخت کاروائی کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ پولیس کو درندہ فورس بنانا غلط بات ہے جبکہ پولیس عوام کی خدمت اور دہشت گردی کے خلاف جنگ لڑ رہی ہے۔

نیا باﺅلنگ ایکشن کلیئر ہونے کی قوی امید ہے: سعید اجمل

دوسری جانب وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے پولیس تشدد واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر تعلیم رانا مشہود کو واقعے کی تحقیقات کروانے کا حکم نامہ جاری ہے جبکہ جلد سے جلد واقعے کی رپورٹ انہیں پیش کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔

مزید : لاہور /اہم خبریں


loading...