یہ مکڑا جنسی عمل کے بعد خود کو نازک حصے سے محروم کیوں کردیتا ہے؟ سائنسدانوں نے معمہ حل کرلیا، حیرت انگیز انکشاف

یہ مکڑا جنسی عمل کے بعد خود کو نازک حصے سے محروم کیوں کردیتا ہے؟ سائنسدانوں ...
یہ مکڑا جنسی عمل کے بعد خود کو نازک حصے سے محروم کیوں کردیتا ہے؟ سائنسدانوں نے معمہ حل کرلیا، حیرت انگیز انکشاف

  


برمنگھم (نیوز ڈیسک) انسان خوش قسمت ہے کہ اس کیلئے افزائش نسل پر خطر عمل نہیں ہے ورنہ قدرت نے بعض ایسے جاندار بھی پیدا کئے ہیں جنہیں افزائش نسل کیلئے جان پر کھیلنا پڑتا ہے اور نر کو اپنے سب سے قیمتی عضو سے محروم ہوناپڑتا ہے۔ کوئن سپائیڈر کہلانے والی مکڑوں کی قسم میں ملاپ کے بعد نر اپنے جسم کا خاص حصہ خود ہی کاٹ کر علیحدہ کر دیتا ہے اور سائنسدان مدتوں سے یہ جاننے کی کوشش کر رہے تھے کہ یہ مکڑا اپنی جان پر ظلم کیوں کرتا ہے۔

کئی سال کی تحقیق اور مشاہدے کے بعد بالآخر یہ معلوم ہو گیا ہے کہ یہ مکڑا اولاد کی خاطر ہی ایسا کرتا ہے۔

شرمناک حق حاصل کرنے کے لئے برازیلین خواتین کا فحش احتجاج

دراصل کوئن مکڑے میں صرف ایک ملاپ کی صلاحیت ہوتی ہے جس کے بعد مادہ کے جسم میں انڈے پیدا ہوتے ہیں۔ ان انڈوں پر کوئی دوسرا مکڑا بھی سپرم ڈال سکتا ہے اور اسی خدشے سے بچنے کیلئے نر ملاپ کے بعد اپنا کچھ حصہ مادہ کے جسم میں ہی توڑ دیتا ہے تاکہ مادہ کی بندش ہو جائے اور کوئی اور مکڑا ملاپ نہ کر پائے۔ اس کے بعد یہ اپنے مخصوص حصے کا بچ جانے والا حصہ بھی کاٹ کر علیحدہ کر دیتا ہے تاکہ یہ ہلکا پھلکا ہو جائے اور دوسرے مکڑوں سے مادہ کی حفاظت باآسانی کر سکے۔ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ کسی بھی نر کیلئے یہ افزائش نسل کا تکلیف دہ ترین عمل ہے۔ یہ تحقیق سائنسی جریدے "Behavioral Ecology and Sociobiology" میں شائع کی گئی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...