باچا خان یونیورسٹی حملوں میں ” را“ ملوث ، نیشنل ایکشن پلان پر اے پی سی بلائی جائے: پرویز خٹک

باچا خان یونیورسٹی حملوں میں ” را“ ملوث ، نیشنل ایکشن پلان پر اے پی سی بلائی ...
باچا خان یونیورسٹی حملوں میں ” را“ ملوث ، نیشنل ایکشن پلان پر اے پی سی بلائی جائے: پرویز خٹک

  

چارسدہ(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا پرویز خٹک نے کہا ہے کہ باچا خان یونیورسٹی پر حملوں میں بھارتی خفیہ ایجنسی ” را“ ملوث ہے،حکومت کو افغانستان سے بھی دوٹوک بات کرنا ہوگی، تاکہ مسئلہ ختم ہو، حملے میں شہید ہونے والوں کے ورثاءکو 20 لاکھ جبکہ زخمیوں کو 4 لاکھ روپے کی امداد دی جائے گی، قومی ایکشن پلان پر اے پی سی بلائی جائے ۔

باچاخان یونیورسٹی کے دورہ کے موقع پر وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا پرویز خٹک نے دہشتگردوں کا مقابلہ کرنے پر سیکیورٹی گارڈز، پاک فوج اور چارسدہ کے عوام کو خراج تحسین پیش کیا اور کہا کہ بھارت میں چھوٹا واقعہ بھی ہوجائے تو الزام پاکستان پر لگایا جاتا ہے، باچا خان یونیورسٹی پر حملوں میں”را“ملوث ہے۔ طورخم کا راستہ کھلا ہے جس کی وجہ سے لوگ بغیر پاسپورٹ یہاں آجاتے ہیں اور انہی کی آڑ میں دہشت گرد سرحد پارکرکے یہاں آئے ہیں حکومت کو افغانستان سے بھی دوٹوک بات کرنا ہوگی تاکہ مسئلہ ختم ہو۔ انہوں نے کہا کہ ایف سی سے چوکیداری کا کام لینے کی بجائے صوبے کے حوالے کرنا چاہیے۔

انہوں نے نیشنل ایکشن پلان پر آل پارٹیز کانفرنس بلانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ آپریشن ضرب عضب کامیابی کے ساتھ جاری ہے اے پی سی میں قومی ایکشن پلان پر غور کیا جائے اور اس میں جو کمی ہو دور کی جائے۔

مزید :

چارسدہ -