رواں سیز ن میں ساڑھے 9ہزارٹن مرچ حاصل ہوئی: محکمہ زراعت پنجاب

رواں سیز ن میں ساڑھے 9ہزارٹن مرچ حاصل ہوئی: محکمہ زراعت پنجاب

  

لاہور(کامرس رپورٹر)پنجاب میں گزشتہ سال 14 ہزار5 سو ایکڑ سے زائد رقبہ پر مرچ کی کاشت سے تقریباّ 9ہزار5 سو ٹن پیداوار حاصل ہوئی۔ محکمہ زراعت پنجاب کے ترجمان نے کاشتکاروں کو سفارش کی ہے کہ وہ پنجاب کے وسطی علاقوں میں کہر اور دھند کا اثر ختم ہونے پر 15 فروری تک کھیتوں میں مرچ کی نرسری کی منتقلی کاعمل مکمل کریں۔ سرخ مرچ کی کاشت کیلئے بہاولپور، رحیم یار خاں، بہاولنگر، اوکاڑہ اور ٹوبہ ٹیک سنگھ اور سبز مرچ کیلئے چنیوٹ، گوجرانوالہ، قصور اور شیخوپورہ کے اضلاع زیادہ موزوں ہیں۔

کاشتکار پنیری منتقلی سے ایک ماہ قبل زمینوں میں10 تا 12 ٹن گوبر کی گلی سڑی کھادمیں 20کلوگرام یوریاملاکر فی ایکڑ استعمال کریں۔ کھیت کی آبپاشی کریں اور وترآنے پر دو تین ہل بمعہ سہاگہ چلاکر زمین کو کھلا چھوڑدیں تاکہ کاشت سے پہلے تمام قسم کی جڑی بوٹیاں اگ آئیں۔ کاشتکارمرچ کی نرسری کی منتقلی سے پہلے زمین وتر آنے پر 2 سے3 ہل بمعہ سہاگہ چلاکر زمین کو اچھی طرح نرم اور بھر بھرا کرلیں۔ پنیری منتقلی سے قبل کھیت کو ہلکا پانی لگائیں اور پنیری کو کھیت سے وتر حالت میں اس طرح اکھاڑیں کہ اس کی جڑیں نہ ٹوٹنے پائیں۔ اوسط زمینوں میں ڈیڑھ بوری ڈی اے پی، ایک بوری سلفیٹ آف پوٹاش بوقت پنیری منتقلی کھیت میں ڈالیں۔ پنیری منتقلی کے ایک ماہ بعد گوڈی کے ذریعے جڑی بوٹیوں کی تلفی کریں اور ایک بوری امونیم سلفیٹ یا آدھی بوری یوریا فی ایکڑ استعمال کریں ۔

مزید :

کامرس -