پشاور،کوئٹہ میں دہشتگردوں کی نقل و حمل خفیہ اداروں کی ناکامی ہے،ساجد میر

پشاور،کوئٹہ میں دہشتگردوں کی نقل و حمل خفیہ اداروں کی ناکامی ہے،ساجد میر

  

لاہور( نمائندہ خصوصی) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ نیشنل ایکشن پلان کے تحت سپیکر بند ہوئے ہیں یا مولوی جبکہ دہشت گرددندنا تے پھر رہے ہیں۔پشاور اور کوئٹہ میں دہشت گردوں کی بڑھتی ہوئی نقل وحرکت انٹیلی جنس اداروں کی ناکامی ہے۔ سانحہ چارسدہ کے حوالے سے مرکزی جمعیت اہل حدیث کے پی کے راہنماؤں مولانا فضل الرحمن مدنی، ڈاکٹر زاکر شاہ اور مولانا محمد سلیمان سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹھیک ہے یہ دہشت گردوں کی کارروائیاں دشمن کروارہا ہے مگر ہمارے ادارے کہاں سوئے ہوئے ہیں افغان بارڈر پر چیکنگ اور سیکورٹی سسٹم کو فعال بنانے کی ضرورت ہے بھارت اور افغانستان نے پاکستان کو کمزور کرنے کے لیے گٹھ جوڑ کرلیا ہے بھارت کو سب سے زیادہ پاک چائینہ اکنامک کا رویڈرو کی تکلیف ہے دہشت گردوں کی کمر توڑنے کی عملی طور پر ضرورت ہے بھارت ہمارا ازلی دشمن ہے اسکے ساتھ پیار کی پینگیں مہنگی پڑیں گی۔ انہوں نے کہا کہ روایتی بیان بازیوں کا دور گزر گزر گیا اب کچھ کرکے دکھانا ہوگا۔ دہشت گرد ی کے مقابلے کے لیے فوج، پولیس اور عوام نے بہت قربانیاں دی ہیں۔ ضرب عضب سے دہشت گردی کم ضرور ہوئی ہے ختم نہیں ہو ئی ابھی مزید جنگ کی ضرورت ہے دہشت گردوں کو ملنے والی بیرونی مدد سب سے زیادہ باعث تشویش ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -