لیڈ پاکستان کے زیر اہتمام سٹیک ہولڈرز کیلئے ٹریننگ ورکشاپ

لیڈ پاکستان کے زیر اہتمام سٹیک ہولڈرز کیلئے ٹریننگ ورکشاپ

  

لاہور( اپنے نامہ نگار سے ) لیڈ پاکستان نے سٹیک ہولڈرز کیلئے ٹریننگ ورکشاپ کا انعقاد کیا جس کا مقصد حکومت پنجاب کے مختلف محکموں کے سینئر افسران کی ٹریننگ کرنا تھا تاکہ اُن میں موسمی تبدیلی کے حوالے سے شعور اُجاگر کیا جا سکے اور پنجاب کی دیرپا ترقی کیلئے راہ ہموار کی جا سکے۔ ٹریننگ ورکشاپ میں ڈاکٹر جاوید اقبال، ڈائریکٹر جنرل، EPDپنجاب، ڈاکٹر قمرالزمان چودھری جنہوں نے پاکستان کی قومی پالیسی برائے موسمی تبدیلی تشکیل دی اور اس موقع پر دیگر محکموں کے افسران بھی شریک تھے۔ ورکشاپ کا انعقاد عارف رحمان،کوآرڈینیٹر، لیڈ پاکستان نے کیا اور لیڈ پاکستان کے بارے میں معلومات فراہم کیں۔ لیڈ پاکستان کے چیف ایگزیکٹو آفیسر علی توقیر شیخ نے موسمی تبدیلی پر روشنی ڈالی اور شرکاء کو باور کرایا کہ موسمی تبدیلی پاکستان کے SDG'sکیلئے بڑا خطرہ ہے اور پنجاب موسمی تبدیلی کی وجہ سے بری طرح متاثر ہو رہا ہے۔ ٹریننگ ورکشاپ میں ڈاکٹر قمرالزمان چودھری نے بھی پریزینٹیشن دی اور مختلف قدرتی آفتوں کا ذکر کیا جو موسمی تبدیلی کی وجہ سے رونما ہوتی ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ 2010 کا سیلاب موسمی تبدیلی کا نتیجہ تھا جس کی وجہ سے دو کروڑ سے زائد لوگ متاثر ہوئے۔ اس کے بعد ایک نشست کا اہتمام کیا گیا جس کا مقصد پنجاب کی ترقی کے لائحہ عمل، SDG's اور موسمی تبدیلی پر بحث کرنا تھا۔ اس کے ساتھ ساتھ مختلف گروپ تشکیل دیئے گئے جس کے تحت صوبائی پالیسی برائے موسمی تبدیلی کے مختلف نکات پر بحث کی گئی جن میں پانی اور زراعت، فوڈ سیکورٹی، انرجی، ڈیزاسٹر اور صنفی شامل ہیں۔ بعد ازاں عارف رحمان نے موسمی تبدیلی سے پیدا ہونے والے خطرات کا جائزہ لیا جبکہ ندیم احمد، پالیسی تجزیہ کار، لیڈ پاکستان نے SDG'sپر مزید روشنی ڈالی۔ ورکشاپ کے اختتام پر سفارشات لیڈ پاکستان کے کوآرڈینیٹر ارشد رفیق نے پیش کیں اور تمام شرکاء نے اس بات پر اکتفا کیا کہ پاکستان کی ترقی کیلئے ضروری ہے کہ موسمی تبدیلی سے نمٹنے کیلئے خاطر خواہ اقدامات کرنے چاہئیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -