ٹیچرز یونین کاسرکاری سکول کی نجکاری کے خلاف مظاہرہ

ٹیچرز یونین کاسرکاری سکول کی نجکاری کے خلاف مظاہرہ

  

لاہور( اپنے نامہ نگار سے) پنجاب ٹیچر یونین پنجاب ضلع لاہور کے زیر اہتمام گزشتہ روز پریس کلب شملہ پہاڑی لاہور کے سامنے سرکاری سکول کی نجکاری کے خلاف مظاہرہ۔مظاہرے میں پنجاب ٹیچر یونین پنجاب کے مرکزی سیکرٹری جنرل کاشف شہزاد چوہدری سمیت ضلع قیادت جس میں اعجاز حسین ، راؤ امرت خاں، نصرت شاہین،محمد عباس، اکرم ہرل،سلیم چشتی،حافظ محمد ساجد،عثمان مدنی، محمد اختر،حافظ محمد ریحان،مہوش فاطمہ،صائمہ سمیت دیگر عہدیداروں او ر سینکڑوں اساتذہ نے شرکت کی۔ اساتذہ نے ہاتھوں میں پلے کارڈز اور بینرز اُٹھا ئے ہوتے تھے۔ کاشف شہزاد چوہدری نے اساتذہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کا سرکاری سکولوں کو PEF(پیف) کے ذریعے پرائیویٹ کرنے کا اقدام درست نہیں ہے۔ یہ غریب طلباء و طالبات پر تعلیم کے دروازے بند کرنے کی سازش ہے جسے ہم کامیاب نہیں ہونے دینگے۔

اور ہم حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ تعلیم کی تجارٹ بند کی جائے۔ ضلع لاہور سٹی کے صدر راؤ امرت خان نے کہا کہ PEC کے غلط نتائج پر اساتذہ کی دی جانے والی ناروا سزاؤں کو ہم نامنظور کرتے ہیں۔ PEC کے افسران اپنی غلطیاں اساتذہ پر ڈال کر انہیں خراب کر رہے ہیں۔ ضلع لاہور ویمن ون کی صدر نصرت شاہین کا کہنا تھا کہ معلمات کو میٹرنٹی لیو پر شوکاز دینا، شادی کی چھٹی پر سزا دینا کہاں کا انصاف ہے۔ یہ سلسلہ بند ہونا چاہئے۔ ضلع لاہور کینٹ کے صدد اعجاز حسین نے کہا کہ اساتذہ کی چھٹیوں پر غیر اعلانیہ پابندی ہے۔طلباء کی حاضری پر اساتذہ کو غیر منصفانہ سزائیں دی جاتی ہیں۔ یہ سلسلہ اب بند ہونا چاہئے ۔ آئی ٹی ٹیچرز کا کمپیوٹر الاؤنس 6سال سے بند ہے۔ دیگر مقررین نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ اساتذہ کے پے سکیلز اپ گریڈ کئے جائیں۔ اساتذہ کو دوسرے صوبوں کی طرح ٹائم سکیل دیا جائے۔ گروپ انشورنس کا میچورٹی کلیم اور ہیلتھ انشورنس کا اجراء کیا جائے۔ آخر میں سانحہ چارسدہ میں ہونے والی دہشت گردی کی بھرپور مزمت کی گئی اور شہداء کے لئے اجتماعی دعا بھی کی گئی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -