سانحہ چارسدہ میں بھارت اور افغانستان ملوث ہیں ،مسئلہ اقوام متحدہ میں اٹھا یا جائے:مذہبی ،سیاسی ،عسکری خارجہ مور کے ماہرین

سانحہ چارسدہ میں بھارت اور افغانستان ملوث ہیں ،مسئلہ اقوام متحدہ میں اٹھا ...

  

لاہور( جاوید اقبال،شہزاد ملک ،محمد نواز سنگرا ) مختلف سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں اورعسکری و خارجہ امور کے ماہرین نے کہا ہے کہ سانحہ چارسدہ میں بھارت اور افغانستان ملوث ہیں جس کا ثبوت بھی جب پاکستانی ایجنسیوں اور حکومت کو مل چکے ہیں تو پھر دیر کس بات کی پاکستان یہ مسلہء اقوام متحدہ میں اٹھائے اب دشمن دہشت گردی کے نام پر پاکستان کے بچے مارنے پر اتر آیا ہے ۔وقت آ گیا ہے کہ بھارت کو اپنی شادیوں میں بلانے کی بجائے ان سے دو ٹوک الفاظ میں بات کی جائے ۔اس امر کا اظہار انہوں نے پاکستان سے اپنے ردعمل میں کیا ۔اس حوالے سے آزاد کشمیر کے سابق وزیر اعظم و کشمیر پی ٹی آئی کے صدر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ چارسدہ میں دہشت گردی بھارت کی طرف سے پاکستان کے خلاف کھلی جنگ ہے اسکی دھمکی بھارتی وزیر دفاع نے پچھلے دس دنوں میں تین دفعہ دی اورواضح کیا تھاکہ ہم اپنے فوجیوں کو جنگ میں نہیں ڈالیں گے بلکہ دہشتگردوں کے ذریعے ہی پٹھانکوٹ کا بدلہ لیں گے اور وہی ہوا اب یہ ثابت ہو چکا ہے کہ افغانستان میں بھارتی کونسل خانے سے تیس لاکھ بھارتی روپیہ دہشتگردی کی واردات کے لئے دیا گیا تھا۔ لہذا اب پوری قوم یہ جاننے میں حق بجانب ہے کہ نواز شریف بھارت میں اسٹیل مل لگانے کے لئے بھارت سے اچھے تعلقات استوار کررہے ہیں۔ یہاں تک کہ مودی کو اپنے گھر بلایا ۔ اسطرح اس دہشتگردی میں براہ راست تو نہیں لیکن غیر دانستہ طور پر نواز شریف بھی اس دہشتگردی کے ذمہ دار ہیں۔مسلم لیگ(ن)کے چئیرمین راجہ ظفر الحق نے کہا کہ حکومت دہشتگردوں کے خلاف پوری قوت سے جنگ لڑ رہی ہے اور آخری دہشتگرد کے خاتمے تک اس کا پیچھا کرے گی۔حکومت کی حالات پر گہری نظر ہے سانحہ چارسدہ کے ملزمان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔اس میں افغانستان ملوث ہے یا بھارت مکمل ثبوت آنے تک کچھ نہیں کہ سکتے اگر وہ ملوث ہوئے تو اقوام عالم کے سامنے لایا جائے گا۔جماعت اسلامی کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ بھارت پاکستان کا کبھی بھی دوست نہیں ہو سکتا ،اس نے ہمیشہ پاکستان میں دہشتگردوں کی سرپرستی شروع کر رکھی ہے اور اس کا اظہار بھارت کے وزیر داخلہ پٹھان کوٹ حملہ کے وقت کر چکے ہیں ۔پاکستان کو بھارت کے ساتھ ساتھ افغانستان سے بھی بات کرنا ہو گی۔سابق وزیر خارجہ خورشید محمو د قصوری نے کہا کہ بھارت کا اصل چہرہ سامنے لانے کیلئے پاکستان عملی اقدامات کرے ۔سانحہ چار سدہ اور سانحہ پشاور کی کڑیاں ملتی ہیں حکومت کو اس پر خاموشی اختیار نہیں کرنی چاہیے اور نیشنل ایکشن پلان پر مکمل عملدرآمد کرائے تک دہشتگردی سے چھٹکارہ ممکن نہیں ہے۔مسلم لیگ(ق)کے رہنما کامل علی آغانے کہا کہ وزیر اعظم بتائیں کہ ان کے کاروباری دوست بھارتی وزیر اعظم مودی سرکار پاکستان میں کیا گل کھلا رہی ہے اور اب وہ پاکستان کے بچے مارنے پر اتر آئے ہیں ۔دہشتگردی کے مکمل خاتمے کیلئے حکومت عسکری اداروں اور قوم کو ایک ہونا ہو گا۔تحریک انصاف کے رہنما جہانگیر ترین نے کہا کہ سانحہ چارسدہ کی جتنی مزمت کی جائے کم ہے مگر دہشتگردی کے خلاف کیے جانیوالے آپریشن ضرب عضب پر حکومت کا فوکس نہیں رہا اس لئے دہشتگرد دوبارہ کارروائیاں کرنے پر اتر آئے ہیں ۔حکومت کو نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کرانے کیلئے فوج کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہونا ہو گا اور پوری قوم کو ایک کرنا ہو گا۔سابق گورنر پنجاب لطیف کھوسہ نے کہا کہ دشمن نے اس وقت پاکستان پر وار کیا جب پاکستان دنیا کی نظروں میں اپنا مقام بہتر بنانے اور سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی کم کرانے میں میدان میں ہے۔دہشتگردی کی شکل میں پاکستان نے بہت نقصان اٹھا لیا ۔ملک دشمن قوتوں کو بے نقاب کرنا اور سخت پالیسی اپنا انتہائی ضروری ہے۔

مزید :

علاقائی -