ریٹائرڈ ملازمین کی کٹوتی شدہ رقم واپس نہ کرنے کی درخواستوں پر سیکرٹری خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل پنجاب سے 19 فروری تک جواب طلب

ریٹائرڈ ملازمین کی کٹوتی شدہ رقم واپس نہ کرنے کی درخواستوں پر سیکرٹری خزانہ ...

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے ریٹائرڈ ملازمین کی کٹوتی شدہ رقم 12برس بعد بھی عدالتی حکم کے باوجود واپس نہ کرنے کی درخواستوں پر سیکرٹری خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل پنجاب سے 19 فروری تک جواب طلب کر لیا۔مسٹرجسٹس سید منصور علی شاہ نے حامد سعید سمیت 40 ریٹائرڈ ملازمین کی توہین عدالت کی درخواستوں پر سماعت کی، درخواست گزاروں کی طرف سے موقف اختیار کیا گیاکہ حکومت نے 2001ء میں درخواست گزاروں کی 40فیصد پنشن 12 برس کے لئے اپنے پاس محفوظ کی جو 2012ء میں واپس ہونی تھی مگر تین برس گزرنے کے باوجود ملازمین کو کٹوتی شدہ 40فیصد پنشن واپس نہیں کی جا رہی، سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب حکومت ان ملازمین کو 40فیصد پنشن کی رقم بارہ برس کے اضافے کے ساتھ واپس کرنے کی پابند ہے، انہوں نے مزید موقف اختیار کیا کہ اگر پنجاب حکومت کے پاس اورنج لائن ٹرین جیسے منصوبوں پر خرچ کرنے کے لئے رقم موجود ہے تو ان ملازمین کے لئے بھی رقم موجود ہونی چاہیے جنہوں نے ساری زندگی حکومت اور عوام کی خدمت میں گزار دی، انہوں نے استدعا کی کہ ملازمین کو 40فیصد پنشن کی رقم اضافے کے ساتھ واپس کرنے کا حکم دیا جائے، عدالت نے سیکرٹری خزانہ اور اکاؤنٹنٹ جنرل پنجاب سے 19فروری کے لئے جواب طلب کر لیاہے۔

مزید :

علاقائی -