ڈاؤ یونیورسٹی کے طلباء سوئی سدرن کے منصوبوں میں شامل ہوں،خالد رحمن

ڈاؤ یونیورسٹی کے طلباء سوئی سدرن کے منصوبوں میں شامل ہوں،خالد رحمن

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) داؤد یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے سی پی ڈی ڈائریکٹوریٹ کے زیراہتمام گیس کے ترسیلی نقصانات (UFG)پر قابو پانے کے حوالے سے اقدامات پر غور کرنے کیلئے سیمینار کا انعقاد کیا جس میں طلبہ اور اساتذہ شامل ہوئے۔ سیمینار کے مہمان خصوصی ایم ڈی سوئی سدرن گیس خالد رحمن تھے۔ انہوں نے سیمینار کے طلبہ اور اساتذہ کوUFG کی وجوہات اور ان کا حل پیش کرنے کی کاوشوں کی تعریف کی۔ اس موقع پر سوئی سدرن کی سینئر مینجمنٹ کا ایک وفد بھی موجود تھا۔ یہ سیمینار مختلف پریزنٹیشنز پر مشتمل تھا۔ داؤد یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر فیض اﷲ عباسی نے گیس کے ترسیلی نقصانات پر قابو پانے کے عنوان پر اپنی ایک تحقیقاتی رپورٹ پیش کی۔پیٹرولیم اینڈ گیس کے اسٹنٹ پروفیسر سلیم مغل نے ’’گیس کے ترسیلی نقصانات کا گورکھ دھندہ‘‘ کے موضوع پر ایک متاثر کن پریزنٹیشن دی جس سے حاضرین کو مسئلہ کو سمجھنے میں بہت مدد ملی۔ اس سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے خالد رحمن نے کہا کہ مجھے ہمیشہ نوجوان طلبہ کے ساتھ مل کر بہت خوشی ہوتی ہے اور میں اس بات پر یقین رکھتا ہوں کہ ہمیں نوجوانوں کو وقت اور توجہ دینی چاہیے کیونکہ وہ ملک کا مستقبل ہیں۔ انہیں سمجھنا چاہیے کہ ایک خوشحالی پاکستان کیلئے ان کو سخت محنت کرنی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ داؤد یونیورسٹی کے طلبہ کا جذبہ اور توانائی دیکھ کر میں ان طلبہ کو سوئی سدرن کے آئندہ منصوبوں میں شرکت کی دعوت دوں گا۔ انہوں نے بتایا کہ اس وقت بہت بڑے پروگراموں، جیسے پائپ لائن کی تعمیر، ایل این جی اور یو ایف جی پر کنٹرول وغیرہ کمپنی کے زیرغور ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ داؤد یونیورسٹی کے طلبہ اس سلسلے میں ہمارا حصہ بنیں۔ اس موقع پر اکیڈمک کوآرڈینٹر ڈاکٹر دوست علی خواجہ، ایکٹنگ رجسٹرار کیپٹن (ر) وقار حسین شاہ ، تمام شعبوں کے چیئرپرسنز، فیکلٹی ممبرز اسٹاف اور طلبہ نے بھی سیمینار میں شرکت کی۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -