’’رانجھا راضی نہ ہوا تو ایک کے بعد دوسرا نوٹس بھی بھجوا دیا‘‘ ’’مسخرہ شو میں شرکت نہ کر کے اہل لاہور نے مجھے خرید لیا‘‘

’’رانجھا راضی نہ ہوا تو ایک کے بعد دوسرا نوٹس بھی بھجوا دیا‘‘ ’’مسخرہ شو ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے باب پاکستان کی تعمیر نو کے منصوبے کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کہا نیب پوچھتی ہے رائیونڈ کی روڈ کیوں بنی اور میں پوچھتا ہوں جہاں چیئرمین نیب رہتے ہیں کیا وہاں سڑک نہیں ہے؟۔رائے ونڈ روڈ سے ملحقہ درجنوں ہسپتال ،سکول اور بستیاں ہیں ، اس کی تعمیر سے کیا گناہ سرزد ہوگیا ہے؟ اورنیب نے حدیبیہ کیس کی ریویو پٹیشن داخل کرتے ہوئے بھی دیر نہیں لگائی ۔ وزیر اعلیٰ نے اس پر ازراہ تفنن کہا کہ وہ جو پنجابی میں کہتے ہیں رانجھا راضی نہ ہوا، نیب کا ایک نوٹس سے رانجھا راضی نہ ہوا تو دوسرا نوٹس بھجوا دیا گیا۔ وزیر اعلیٰ نے پرجوش انداز میں اہل لاہو رکو مخاطب کرکے کہا کہ آپ نے مال روڈ کے مسخرہ شو میں شرکت نہ کر کے ہمیشہ کے لیے مجھے خرید لیا ہے ، میں آپ کے اس احسان کو ہمیشہ یاد رکھوں گا اور دن رات آپ کے لیے محنت کروں گا ،کام کروں گا۔ انہوں نے کہا اہل لاہور اورنج لائن کی تعمیر میں تاخیر کا سبب بننے والے پی ٹی آئی لیڈروں سے الیکشن میں بدلہ لیں گے۔ وزیر اعلیٰ کے اعلان پر مجمع میں ہزاروں افراد نے ہاتھ اٹھا کر الیکشن میں بدلہ لینے کا وعدہ کیا تو وزیر اعلیٰ نے کہا کہ میں بھی آپ کے لیے والٹن روڈ کی ایل او ایس روڈ کی طرز پر تعمیر کا وعدہ کرتا ہوں ۔وزیراعلی نے ایک موقع پر کہاکہ آج تک وزیراعظم کے عہدے کے لئے میرے لئے کسی نے اس طرح ہاتھ کھڑے نہیں کئے جس طرح آپ لوگوں نے خواجہ سعد رفیق کے کہنے پر کھڑے کئے ہیں ۔وزیراعلی نے اس موقع پر ہلکے پھلکے انداز میں کہاکہ خواجہ صاحب مجھے لگتاہے کہ آپ نے دوستی کی شکل میں دشمنی کی ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -