چیف سیکریٹری پنجاب کو بزرگ پنشنر کوبقایاجات کی ادائیگی کاحکم

چیف سیکریٹری پنجاب کو بزرگ پنشنر کوبقایاجات کی ادائیگی کاحکم

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور ( نامہ نگار خصوصی) سپریم کورٹ نے بزرگ پنشنر اور سابق ایڈیشنل میڈیکل سپرنٹنڈنٹ نشتر ہسپتال ملتان کے دوبچوں کو میرٹ پر کسی بھی پرائیویٹ کالج میں میڈیکل میں داخلہ دینے کا حکم دیتے ہوئے قرار دیا کہ ان بچوں کی فیس سپریم کورٹ ادا کرے گی ۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار، مسٹر جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس منظور احمد ملک پر مشتمل تین رکنی فل بنچ نے یہ حکم بزرگ پنشنر ڈاکٹر عقیل احمد کی درخواست پر جاری کیا ہے، درخواست گزار کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گزار ایک معذور شہری کی زندگی گزار رہے ہیں، ریٹائرمنٹ کے بعد پنجاب حکومت نے پنشن ادا نہیں کی، عدالت کے استفسار پر بتایا گیا کہ ابھی تک پنشن واجبات کا ایک روپیہ بھی ادا نہیں کیا گیا،بچوں کی فیس کے لئے پیسے نہ ہونے کی وجہ سے درخواست گزار کی بیٹی فاطمہ الزہرہ اور بیٹا امیر حمزہ کو داخلہ ہی نہیں مل سکا، اگر حکومت پنشن جاری کردیتی تو بچوں کو وقت پر داخلہ مل جانا تھا، جس پر سپریم کورٹ نے درخواست نمٹاتے ہوئے کمرہ عدالت میں موجود چیف سیکرٹری پنجاب کو حکم دیا کہ درخواست گزار کی پنشن فوری ادا کی جائے جبکہ دونوں بچوں کے میرٹ کا جائزہ لینے کے بعد انہیں کسی بھی پرائیویٹ میڈیکل کالج میں داخلہ دلوانے کے لئے فوری اقدامات کئے جائیں، اگر بچے میرٹ پر آتے ہیں اور انہیں داخلہ ملتا ہے تو ان کی تعلیم کا خرچ سپریم کورٹ اٹھائے گی۔
بزرگ پنشنرز

مزید :

صفحہ اول -