ایسا تعلیمی معیار چاہتے ہیں جس میں منشی نہیں وکیل پیدا ہوں، چیف جسٹس

ایسا تعلیمی معیار چاہتے ہیں جس میں منشی نہیں وکیل پیدا ہوں، چیف جسٹس

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


لاہور ( نامہ نگار خصوصی) سپریم کورٹ نے غیرمعیاری لاء کالجز کے خلاف ازخودنوٹس کیس میں قرار دیا ہے کہ معیاری نظام تعلیم چاہتے ہیں، قانون کی تعلیم کا ایسا معیار چاہتے ہیں کہ جس سے منشی نہیں بلکہ اچھے وکیل پیداہوں۔ سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار، مسٹر جسٹس اعجاز الاحسن اور جسٹس منظور احمد ملک پر مشتمل تین رکنی فل بنچ نے غیرمعیاری لاء کالجز کے خلاف ازخود نوٹس کیس کی سماعت شروع کی تو وائس چیئرمین پاکستان بار کونسل احسن بھون، ممبر پاکستان بار کونسل اعظم نذیر تارڑ، سپریم کورٹ بار کے سابق صدر حامد خان ایڈووکیٹ، معروف قانون دان انور کمال اور احمد حسن بھی عدالت میں پیش ہوئے، پاکستان لاء کالج کے وکیل نے بتایا کہ ان کی ایک درخواست سپریم کورٹ میں زیر التواء ہے، اس درخواست میں صرف یہ استدعا کی گئی ہے کہ پاکستان بار کونسل کے رولز کے ذریعے قانون کے تحت بننے والی سرکاری یونیورسٹیوں کے اختیارات کم نہ کئے جائیں، استدعا ہے کہ اس درخواست کو بھی ساتھ ہی سن لیا جائے، چیف جسٹس پاکستان نے استدعا منظور کرتے ہوئے درخواست کو ازخود نوٹس کیس کے ساتھ یکجا کردیا، عدالت کو بتایا کہ سپریم کورٹ کی ہدایت پر لاء کالجز کمیشن نے کام شروع کر دیا ہے، تجاویز بنا کر 6 ہفتوں میں رپورٹ جمع کرا دیں گے ، دوران سماعت چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ انہوں نے ایک اشتہار نما تصویر دیکھی جس پر لکھا تھا کہ ایک رات میں بی اے پاس کریں، تعلیمی نظام ایسے نہیں چلے گا، قانون کا معیار تعلیم بہتر کرنا چاہتے ہیں، قانون کی تعلیم کا ایسا معیار چاہتے ہیں کہ منشی نہیں بلکہ اچھے وکیل پیدا ہوں، یہ ایک حقیقت ہے کہ سرکاری یونیورسٹیاں طلبہ کا بوجھ نہیں اٹھا پا رہی ہیں جس کی وجہ سے پرائیویٹ یونیورسٹیوں اور لاء کالجز میں مقابلے کی فضا ہے، پرائیویٹ لاء کالجز سرکاری یونیورسٹیوں کا خلا ء ضرور پوراکریں لیکن کاروبار نہ کریں، سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ لاء کالجز کمیشن اپنی رپورٹ 6 ہفتوں میں تیار کرے اور کمیشن کے ماتحت تمام صوبوں کی نمائندہ کمیٹیوں سے تجاویز لے کر ان کی ایک نقل متعلقہ سٹیک ہولڈرز کو دیں تاکہ وہ اپنا اعتراض بروقت جمع کرا سکیں، عدالت اسے معاملے کو فوری نمٹانا چاہتی ہے، سپریم کورٹ نے غیرمعیاری لاء کالجز پر ازخود نوٹس کیس پر مزید کارروائی آئندہ سماعت تک ملتوی کر دی۔
لاء کالجز کمیشن

مزید :

صفحہ اول -