”علماءکرام اس پر نظرثانی کریں کیونکہ۔۔۔“ سعودی سائیکالوجسٹ نے شرمناک ترین کام کو مردوں کی بنیادی ضرورت قرار دیدیا، ایسی بات کہہ دی کہ پورے سعودی عرب میں ہنگامہ برپا ہو گیا، ہر کوئی حیران پریشان رہ گیا

”علماءکرام اس پر نظرثانی کریں کیونکہ۔۔۔“ سعودی سائیکالوجسٹ نے شرمناک ترین ...
”علماءکرام اس پر نظرثانی کریں کیونکہ۔۔۔“ سعودی سائیکالوجسٹ نے شرمناک ترین کام کو مردوں کی بنیادی ضرورت قرار دیدیا، ایسی بات کہہ دی کہ پورے سعودی عرب میں ہنگامہ برپا ہو گیا، ہر کوئی حیران پریشان رہ گیا

  

ریاض (ڈیلی پاکستان آن لائن) کسی شخص کی زندگی میں ایسی بہت سی باتیں ہوتی ہیں جو وہ نہیں کر سکتا اور اس کی وجہ یہ ہے کہ بہت سی وجوہات کی بناءپر یہ باتیں کرنا پسند نہیں کی جاتیں اور سب سے بڑا ڈر یہ ہوتا ہے کہ ایسی کوئی بھی بات کرنے سے شرمندگی ہو گی۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔ریسلنگ کو ڈرامہ کہنے والی میا خلیفہ کو ریسلنگ رنگ میں بلایا گیا تو وہاں امریکی ریسلر نے ایسا شرمناک ترین کام کر دیا کہ ہر کوئی دیکھتا رہ گیا، ویڈیو نے سوشل میڈیا پر ”دھماکہ“ کر دیا

’مشت زنی‘ بھی ایک ایسا ہی مسئلہ ہے جس پر مسلم معاشرے میں بات کرنا بے شرمی سمجھا جاتا ہے حتیٰ کہ غیر مسلم ممالک میں بھی لوگوں کے درمیان اس معاملے پر بات نہیں کی جاتی کیونکہ اسے غلط سمجھا جاتا ہے لیکن سعودی عرب کے ایک سائیکالوجسٹ نے ٹی وی شو میں بیٹھ کر اس بارے میں ایسی بات کہہ دی ہے کہ پورے سعودی عرب میں ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔

سعودی عرب کے سائیکالوجسٹ ڈاکٹر طارق الحبیب نے اس معاملے پر سب کو گنگ کر دیا کیونکہ ان کا کہنا ہے کہ ”میں مشت زنی کو انسان کی بنیادی ضرورت کے طور پر دیکھتا ہوں، یہ بالکل ایسی ہی ضرورت ہے جیسے صاف کرنے کی ضرورت ہے یا پھر جیسے کھانے اور پینے کی ضرورت ہے۔“

انہوں نے یہ کہتے ہوئے علماءکرام سے اس معاملے پر نظرثانی کا مطالبہ بھی کیا کہ جب ایک شخص خود کو ’زنا‘(جو گناہ کبیرہ ہے) سے روکنے کیلئے مشت زنی کی جانب راغب ہوتا ہے تو اسے حرام تصور نہیں کیا جائے گا کیونکہ مذکورہ شخص کو اس وقت اس کی اشد ضرورت ہوتی ہے۔

ایک غیر شادی شدہ شخص زنا سے بچنے کی خواہش کرتا ہے تو وہ اضطراب میں مبتلا ہو سکتا ہے اور دباﺅ کا شکار ہو سکتا ہے۔ مشت زنی بغیر کسی نقصان کے اس دباﺅ اور اضطراب کو ختم کرنے میں مددگار ہوتی ہے، اگر کوئی شخص اسے اپنی روز مرہ کی عادت نہ بنا لے۔

سعودی ڈاکٹر کے اس بیان نے ٹی وی شو کے میزبان کو بھی ششدر کر دیا جو شائد بات کو مزید آگے نہیں بڑھانا چاہتا تھا اس لئے کہا کہ ”مجھے یہ کہنے کی اجازت دیجئے کہ ابھی ابھی آپ نے جو کچھ کہا ہے کہ وہ متنازعہ رائے ہونے سے بھی کہیں زیادہ ہے۔ یہ بہت ششدر کر دینے والا ہے۔“

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”زینب کیلئے انصاف مانگنے نکلی تھی تب تو بڑی۔۔۔“ کراچی کے ساحل پر پکنک مناتی ماہرہ خان نے ایسا لباس پہن کر تصاویر شیئر کر دیں کہ پاکستانیوں کے غضب کا نشانہ بن گئیں، سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہو گیا

یہ گفتگو سوشل میڈیا پر بھی وائرل ہو گئی جس پر صارفین نے مختلف آراءکا اظہار کیا تاہم اکثریت تو اس بات پر بھی ششدر نظر آئی کہ اس معاملے پر ٹی وی پر گفتگو ہوئی ہے۔ اس کے بعد اور بھی حیران کن بات یہ ہوئی کہ سوشل میڈیا پر اس معاملے پر بحث شروع ہو گئی کیونکہ سعودی عرب میں آج تک اس معاملے پر یوں کھل کر بات نہ کی گئی تھی۔

۔۔۔ویڈیو دیکھیں۔۔۔

مزید :

عرب دنیا -