ہائیکورٹ نے پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں کنٹریکٹ پر سرکاری ملازمین کی بھرتیاں تاحکم ثانی روک دیں

ہائیکورٹ نے پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں کنٹریکٹ پر سرکاری ملازمین کی ...
ہائیکورٹ نے پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں کنٹریکٹ پر سرکاری ملازمین کی بھرتیاں تاحکم ثانی روک دیں

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں کنٹریکٹ پر سرکاری ملازمین کی بھرتیاں تاحکم ثانی روکتے ہوئے پنجاب حکومت اور چیئرمین پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن سے 14فروری تک تفصیلی جواب طلب کر لیا ہے۔

مسٹر جسٹس فرخ عرفان خان نے یہ عبوری حکم امتناعی چودھری شعیب سلیم ایڈووکیٹ کی درخواست پرجاری کیا۔درخواست گزار کی طرف سے الزام لگایا گیا کہ یہ بھرتیاں عام انتخابات میں حکومت کے دھاندلی کے منصوبہ کا حصہ ہیں ۔ درخواست گزار وکیل نے موقف اختیار کیا کہ انہوں نے پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں 126 ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ اینڈ ایویلیوایشن اسسٹنٹس کی بھرتیاں چیلنج کر رکھی ہیں جبکہ پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن نے عدالتی نوٹس کے باوجود ریکروٹمنٹ پالیسی 2004ءکی خلاف ورزی کر کے بھرتیاں کر لی ہیں اور اب کیس عدالت میں زیر سماعت ہونے کے باجود مزید 52 اسامیوں کا اشتہار بھی جاری کر دیا گیا ہے، درخواست گزار نے عدالت کو آگاہ کیا کہ پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں ڈسٹرکٹ مانیٹرنگ آفسیرز کی اسامیوں پر سابق فوجیوں کو غیرقانونی طور پر بھرتی کیا گیا اور کسی ایک بھی سویلین کو نوکری نہیں دی گئی جبکہ ریکروٹمنٹ پالیسی پہلے ہی سابق فوجیوں کو 5نمبر اضافی دیتی ہے ایسی صورت میں انہیں نوکری کے لئے ترجیح دینا بنیادی حقوق کی خلاف ورزی ہے، انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے دلائل دیئے کہ حکومت الیکشن سے قبل کنٹریکٹ پر سرکاری بھرتیاں کر کے قبل از وقت انتخابی دھاندلی کر رہی ہے، حکومت نے بھاری رشوت پر صوبہ بھر میں ایکس سروس مینوں کو ملازمتیں تقسیم ہیں ، انہو ںنے استدعا کی کہ پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں 126 مانیٹرنگ افسروں کی بھرتیاں کالعدم کی جائیں اور پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں نئی 52 اسامیوں پر بھرتیوں کا عمل روکا جائے جبکہ حکومت کی 2014 ءکی ریکروٹمنٹ پالیسی کے مطابق بھرتیاں کرنے کا حکم دیا جائے ، عدالت نے درخواست کی ابتدائی سماعت کے بعد پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن میں کنٹریکٹ پر سرکاری بھرتیاں روکتے ہوئے پنجاب حکومت اور چیئرمین پنجاب ایجوکیشن فاﺅنڈیشن سے 14فروری کو تفصیلی جواب طلب 

کر لیا ہے اور ریمارکس دیئے ہیں کہ اگر عدالتی حکم پر عملدرآمد نہ ہوا تو پنجاب حکومت کو نتائج بھگتنا ہوں گے ۔

لائیو ٹی وی دیکھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -