ریلوے ملازمین کامطالبات منظوری کیلئے احتجاج، ریلی، انتظامیہ پرتنقید

ریلوے ملازمین کامطالبات منظوری کیلئے احتجاج، ریلی، انتظامیہ پرتنقید

  



ملتان(نمائندہ خصوصی) کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی، ٹوٹے پھوٹے کوارٹرز کی مرمت، الاؤنسز کی فراہمی اور ریلوے ہسپتالوں اور ضسکیل اپ گریڈیشن کے لئے ریلوے ملازمین سراپا احتجاج بن گئے،لوکو شیڈ سے کینٹ ریلوے اسٹیشن تک احتجاجی ریلی نکالی گئی تفصیل کے مطابق ریلوے ملازمین نے ٹوٹے پھوٹے کوارٹرز، الاؤنس کی عدم فراہمی، کنٹریکٹ ملازمین کی مستقلی،ریلوے ہسپتالوں سمیت سکیل کی اپ گریڈیشن نہ ہونے کے خلاف پلیٹ فارم نمبر تین سے ریلوے اسٹیشن چوک تک ریلی نکالی(بقیہ نمبر38صفحہ7پر)

اور احتجاجی مظاہرہ کیا،اس موقع پر حکومت اور ریلوے انتظامیہ کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی، مظاہرین نے تنخواہوں میں اضافے اور سفری الاؤنس کی فراہمی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ عارضی ملازمین اور وزیراعظم پیکج کے تحت کنٹریکٹ ملازمین کو کنفرم کرنے، سکیل نمبر 1 سے سکیل نمبر 16 تک کے تمام ملازمین کی اپ گریڈیشن،تمام ٹیکنیکل سٹاف کو بلاتفریق بنیادی تنخواہ کا 25 فیصد ٹیکنیکل الاؤنس، تمام گینگ مینوں کو 5ہزار روپے ہارڈ شپ، ریلوے ہسپتالوں کو اپ گریڈ اور ریلوے ملازمین کی تنخواہوں میں سے کوارٹروں کی مرمت کی مد میں 5فیصد کٹوتی کو ختم کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں،مظاہرین کا مزید کہنا تھا کہ سگنل ٹیلی کام سٹاف سے عالمی قوانین کے مطابق آٹھ گھنٹے ڈیوٹی، اور فنڈز کی عدم فراہمی کے باعث ریلوے ملازمین کو عرصہ دراز سے گریجویٹی،جہیز فنڈ، بہبود فنڈ،ایک بنیادی تنخواہ کی ادائیگی کو یقینی بنایا جائے،ورنہ احتجاج کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے ریل کا پہیہ جام کر دیں گے،مظاہرے کی قیادت سلیم چشتی، اجمل چوہدری اور مرزا ریاض غالب نے کی جبکہ احتجاج میں ریلوے ملازمین کی کثیر تعداد بھی شریک ہوئی،مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے،جن پر ان کے تمام مطالبات درج تھے۔

مزید : رائے /ملتان صفحہ آخر