نواز شریف حکومت نے مشکل حالات میں چیلنجز کا مقابلہ کیا، عبدالقیوم

نواز شریف حکومت نے مشکل حالات میں چیلنجز کا مقابلہ کیا، عبدالقیوم

  



پشاور(سٹی رپورٹر) سینٹ کی اسٹینڈنگ کمیٹی دفاع کے چئیرمین اور پاک ایران پارلیمنٹری فرینڈشپ گروپ کے چیرمین لیفٹنٹ جنرل (ر) عبد ا لقیوم نے کہا ہے کہ ملک حقیقی معنوں میں آگئے تب جاسکتا ہے جب ملک میں انصاف پر مبنی احتساب کاشفاف نظام رائج ہو اور سب کا یکسان اور بے لاگ احتساب ہورہا ہو۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور پریس کلب میں میٹ دی پریس پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا 2013میں ملک بدترین دہشت گردی کا شکار تھا،نواز شریف نے جب حکومت سنبھالی تو ملک میں توانائی کا بحران عروج پر تھا،سی این جی اسٹیشنز پر لوگوں کی قطاریں لگی ہوتی تھی، لیکن مشکل حالات کے باوجود نواز شریف کی حکومت نے چیلنجز کا مقابلہ کیا اور جب مسلم لیگ ن کی حکومت نے اپنا دورانیہ مکمل کیا تو ملک میں توانائی کا بحران ختم ہوچکا تھا، ڈیڑھ ہزار کلومیٹر موٹرویز مکمل ہوچکے تھے،پیٹرولیم کی قیمتیں کم ترین سطح پر تھیں،لیکن ہمارے بعد آنے والی حکومت نے اپنی ناقص حکمرانی سے پہلے ہی سال 15لاکھ لوگوں کو بیروزگار کیا، جس کے نتیجے میں تقریبا 50لاکھ افراد غربت کی لکیر سے نیچے چلے گئے۔لیفٹنٹ جنرل (ر) عبد القیوم نے کہا کہ حکومت نے معاشی مسائل پر توجہ دینے کے کبجائے اپنے سیاسی؛مخالفین کو کچلنے پر زیادہ توجہ دیا،اور احتساب کے نام پر اپنے مخالفین کو انتقام کا نشانہ بنایا۔انہوں نے ملکی سیاسی صورتحال کا زکر کرتے ہوئے کہا کہ سیاسی جماعتوں میں جمہوریت کی کمی ہے،سیاستدان اپنے قیادت کے سامنے آواز بلند کرنے کی جرات بھی نہیں کرتے، سیاسی جماعتیں اپنے موقف پر ڈٹ جانے کے بجائے ایک آہٹ پر بھکر جاتے ہیں۔انہوں نے حکمرانوں کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اپکے ہاتھ میں اقتدار ایک امانت ہے، جس کا آپ نے حساب دینا ہوتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان ملائشیاء ا ترکی اور ایران کے ساتھ مل کر بلاک بنانے کی بات کی مگر پھر کسی دباو کے نتیجہ میں اپنی بات سے پھیر گیا۔انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم عمران خان ایران اور سعودیہ عرب کے درمیان بھی مصالحت کی بھی بات کرتے ہیں لیکن پھر ثالث کے کردار ادا کرنے سے کتراتے ہے انہوں نے کشمیر کی صورتحال کا زکر کرتے ہوئے کہا کہ بھارت نہتے کشمیریوں پر ظلم کے پہاڑ توڑ رہا ہے، لیکن ہماری حکومت عالمی سطح پر ابھی تک بھارت کے خلاف رائے عامہ ہموار نہیں کرسکا۔اس موقع پر پشاور پریس کلب کے صدر سید بخار شاہ،جنرل سیکرٹری عمران یوسفزئی،عزیز بونیری،نائب صدر فہد شہزادہ،خیبر یونین آف جرنسلٹ کے صدر فدا خٹک سمیت دیگر مہمانوں اور صحافیوں کی بڑی تعداد بھی موجود تھے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر