پولیس شہداء کی ورثاء کو پیکجکی عدم ادائیگی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

پولیس شہداء کی ورثاء کو پیکجکی عدم ادائیگی کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

  



پشاور (سٹی رپورٹر) خیبر پختونخواہ پولیس شہدا کی ورثا نے شہدا ء پیکج کے تحت بھرتیا ں نہ ہونے اور صوبائی حکومت کی عدم دلچسپی کے خلاف پشاور پریس کلب کے سامنے اختجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے صوبائی حکومت اور دیگر اعلی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ پولیس شہداء کے ورثا کو بھرتی کرنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدام اٹھائیں جائے مظاہرین نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھائے رکھے تھے مطاہرے کی قیادت وجاہت علی خان،ثناء اللہ،عدنان،بلال اور دیگر شداء کے ورثا نے کی اس موقع پر شہداء کے ورثاکاکہنا تھا کہ ہمارے اپنوں نے ملک اور قوم کی خاطر اپنی جانوں کا نظرانہ پیش کیا مگر 2017سے 200 شہداء کے بچے درخواستیں دینے کے باوجود شہید کوٹہ پر بھرتی نہ ہوسکے اور پچھلے تین سالوں سے ہماری سمری حکومت کے پاس پڑئی ہوئی ہیں جس پر کوئی عمل درامد نہیں ہوئی ہیں جو قابل افسوس ہے انہوں نے کہا کہ وزیر قانون کہتے ہے کہ تین سو شہداء کے بچوں کو 2015 میں بھرتی کیا تھا ہم اس حکومت کو بتانا چاہتے ہیں کہ 2015کے بعد بھی پولیس کے جوان شہید ہوئے ہیں جن کے بچے تا حال محکمہ پولیس میں بھرتی نہ ہوسکے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پولیس شہداء کے ورثا بھر تی نہ ہونے کی وجہ سے مختلف مسائل کا شکار ہیں اور انکے گھروں میں فاقوں نے ؑڈھیرے ڈال رکھے ہیں جبکہ صوبائی حکومت اور محکمہ پولیس اس حوالے سے چشم پوشی اختیار کئیے ہوئے ہیں جو شہداء کے خون کے ساتھ بی انصافی ہے پولیس شہداء کے ورثا نے صوبائی حکومت اورر دیگر اعلی حکام سے پرزور مطالبہ کیا ہے کہ ہمارے بھرتیوں میں مزید تاخیر نہ کی جائے اورہماری بھرتیاں یقینی بنانے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات کیں جائے تاکہ ہیں ریلیف مل سکے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر