ایم سی بی کی 1400 برانچوں پر ویسٹرن یونین کی رقوم کی منتقلی کا اعلان

ایم سی بی کی 1400 برانچوں پر ویسٹرن یونین کی رقوم کی منتقلی کا اعلان

  



کراچی(پ ر)سرحد پار کراس کرنسی منی کی نقل و حرکت اور ادائیگیوں میں نمایاں ترین ویسٹرن یونین اور پاکستان کے اہم ترین بینکوں میں سے ایک ایم سی بینک نے پاکستان کے دونوں بڑے شہروں اور دوردراز کے علاقوں میں ایم سی بی بینک کی 1400 سے زائد برانچوں پر ویسٹرن یونین کی رقوم کی منتقلی کی سروسز کے شروع کا اعلان کیا ہے۔صارفین دنیا بھر سے اپنے اہلِ خانہ اور پیاروں سے 75سے زائد ممالک کے علاوہ خطوں اور 200 سے زائد ممالک میں قائم 550,000 سے زائد مقامات پر اس کے واک ان ایجنٹس کے نیٹ ورک سے ویسٹرن یونین کی ڈیجیٹل سروسز کے ذریعے آنے والی رقوم وصول کرسکتے ہیں۔ سعودی عرب، پاکستان، افغانستان، سوڈان اور جنوبی سوڈان کے لیے ویسٹرن یونین کے کنٹری ڈائریکٹر علی بدری دین نے کہا: ”پاکستان ویسٹرن یونین کے لیے ایک اہم مارکیٹ ہے اور ہم ایم سی بی بینک کے ساتھ مالی شمولیت کو فروغ دینے اور صارفین کو نقد رقم بلا تعطل وصول کرنے کی پیشکش میں تعاون کرنے پر نہایت پرمسرت ہیں۔“ ہمارا یقین ہے کہ جب پیسہ گردش کرتا ہے تو بہتری آتی ہے۔ معاشی سپورٹ سے دنیا میں مواقع پیدا ہوتے ہیں: چھوٹے کاروبار بڑھتے ہیں، ایک بچہ سکول جاتا ہے، معاشی امداد تب پہنچتی ہے جب اس کی ضرورت ہوتی ہے اور معاشی ترقی عمل میں آتی ہے۔پاکستان میں موصول کی جانی والی ذاتی ترسیلاتِ زر جی ڈی پی کے لیے اہم معاون ہیں۔ ورلڈ بینک کے اعدادوشمار کے مطابق 2018 میں پاکستان دنیا کا ساتواں بڑا ترسیلاتِ زر وصول کرنے والا ملک تھا۔ملک میں بیرونِ ملک نقل مکانی کی شرح سب سے زیادہ ہے جو مقامی طور پر صارفین کو رقم کی منتقلی کی موثر خدمات پیش کرنے کی اہمیت کو اجاگر کرتی ہے۔ایم سی بی بینک میں ٹرانزیکشن بینکنگ ڈویژن کے سربراہ محمد نعیم سہگل نے کہا: ”جب لوگ روزگار کے بہتر مواقع کی تلاش میں دوسرے ممالک میں منتقل ہوجاتے ہیں۔ بہت سے گھروں میں ترسیلاتِ زر خاندانی آمدنی کا ایک اہم ذریعہ بن جاتا ہے۔وہ ناصرف ملک بلکہ گھر کی معاشی ترقی کو بھی فروغ دیتے ہیں۔ہم صارفین کو عالمی سطح پر اپنی رفتار، بھروسے، اعتماد اور آسانی کے لیے پہچانے جانے والے برانڈ، ویسٹرن یونین کے ساتھ رقم کی منتقلی کی سروسز تک رسائی کی پیش کش کرتے ہوئے خوشی محسوس کرتے ہیں“ویسٹرن یونین پچھلے 20 سال سے پاکستان میں کام کر رہا ہے اور اس وقت پورے ملک میں 9600 ایجنٹس لوکیشن پر محیط نیٹ ورک کا حامل ہے۔

مزید : کامرس