مسئلہ کشمیر، ٹرمپ پھر ثالثی کیلئے تیار، پاک امریکہ تعلقات ماضی میں کبھی اتنے قریب نہیں رہے جتنے آج ہیں، امریکی صدر اسلام آباد واشنگٹن ایک پیج پر: عمران خان

    مسئلہ کشمیر، ٹرمپ پھر ثالثی کیلئے تیار، پاک امریکہ تعلقات ماضی میں کبھی ...

  



ڈیووس (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوزایجنسیاں)وزیر اعظم عمران خان عالمی اقتصادی فورم میں شرکت کیلئے سوئٹزرلینڈ کے شہر ڈیووس پہنچ گئے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، معاون خصوصی برائے سمندر پار پاکستانیز ذوالفقار بخاری اور معاون خصوصی قومی سلامتی ڈاکٹر معید یوسف بھی ان کے ہمراہ ہیں۔وزیر اعظم عالمی اقتصادی فورم کے خصوصی سیشن سے خطاب کریں گے۔ادھرسائیڈ لائن ملاقاتوں میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وزیراعظم عمران خان سے ایک بار پھر کہا ہے کہ میں مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالثی کا کردار ادا کر سکتا ہوں۔تفصیلات کے مطابق ورلڈ اکنامک فورم کی سائیڈ لائنز پر وزیراعظم عمران خان اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے درمیان انتہائی خوشگوار ماحول میں ملاقات ہوئی۔ اس موقع پر صدر ٹرمپ کا کہنا تھا کہ وزیراعظم عمران خان میرے دوست ہیں، ان کیساتھ ملاقات کرکے خوشی ہوئی۔ پاکستان اور امریکہ کے درمیان اچھے تعلقات ہیں۔ دونوں ممالک ماضی میں کبھی اتنے قریب نہیں رہے جتنے آج ہیں۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ کشمیر کی صورتحال پر گہری نظر رکھے ہوئے ہیں۔ ہم کشمیر کی صورتحال پر بھی بات کریں گے۔ انہوں نے ایک بار پھر مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کرتے ہوئے کہا کہ میں مسئلہ کشمیر پر پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالثی کا کردار ادا کر سکتا ہوں۔پاکستانی وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ صدر ٹرمپ کیساتھ دوبارہ ملاقات کرکے خوشی ہوئی۔ افغانستان کے معاملے پر پاکستان اور امریکا ایک پیج پر ہیں۔وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا پاکستان خطے میں امن کا خواہاں ہے اور خطے کے استحکام کیلئے کردار ادا کرتا رہے گا۔ امر یکی صدر کیساتھ افغانستان کی صورتحال پر بات ہوگی۔بعدازاں وزیراعظم عمران خان نے سنگاپورکے ہم منصب اور صدر آذربائیجان سے ملاقاتیں کیں،جن میں پاک سنگاپور، پاک آذربائیجان دوطرفہ تعلقات،اقتصادی شعبوں میں تعاون کے فروغ پر بات چیت اور تبادلہ خیال کیا گیا۔دوسری طرف ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق عالمی اقتصادی فورم کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان دیگر عالمی رہنما ؤں سے غیر رسمی ملاقاتیں بھی کریں گے۔اس کے علاوہ وزیراعظم کے کارپوریٹ، کاروباری، ٹیکنالوجی اور فنانس سمیت بین الاقوامی مالیاتی اداروں کے نمائندوں کیساتھ ملاقاتیں بھی متوقع ہیں۔ترجمان دفتر خارجہ عائشہ فاروقی کی جانب سے گزشتہ روز جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ عالمی اقتصادی فورم کے بانی اور ایگزیکٹو چیئرمین کلاز شواب نے وزیر اعظم عمران خان کو عالمی اقتصادی فورم کے سالانہ اجلاس میں شرکت کی دعوت دی ہے۔ڈیووس میں عالمی اقتصادی فورم کا اجلاس 21 جنوری کو شروع ہوگا اور 23 جنوری تک جاری رہے گا۔وزیراعظم عمران خان پاکستان کے وژن اور معیشت، امن و استحکام، تجارت، بزنس اور سرمایہ کاری کے مواقع سے متعلق پاکستان کی کامیابیوں سے آگاہ کریں گے۔عمرا ن خان ڈیووس میں مقبوضہ جموں و کشمیر کی موجودہ صورت حال کو بھی اجاگر کریں گے اور اہم علاقائی اور بین الاقوامی امور پر پاکستان کے نکتہ نظر پر بھی روشنی ڈالیں گے۔ا مر یکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سوئٹزرلینڈ کے شہر ڈیوس میں جاری عالمی اقتصادی فورم کے اجلاس کے دوران اپنی تقریر میں موسمیاتی تبدیلی کے حوالے سے حکومتوں کی کارکردگی پر تنقید کرنے والوں کو ماحولیاتی 'عذاب کے پیغمبر' قرار دیا۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے ناقدین کے لیے ان الفاظ کا استعمال سویڈن کی نوجوان ماحولیاتی مہم جو گریتا تھونبرگ کی موسمیاتی تبدیلی کے بحران پر حکومت کی عدم توجہی کے حوالے سے تنقید کے بعد کیا۔امریکی سینیٹ میں مواخذے کی کارروائی شروع ہونے والے قبل ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈیوس میں سخت تقریر کی جہاں گریتا تھونبرگ بھی ہال میں موجود سامعین میں شامل تھیں۔ٹرمپ کا کہنا تھا‘ہمیں رنگ بدلتے عذاب کے پیغمبروں اور ان کی الہامی پیش گوئیوں کو مسترد کرنا چاہئے۔ امر یکی صدر نے اس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ‘ڈیوس کا دورہ اجلاس کے حوالے سے تھا جہاں دنیا کے اہم ترین شخصیات اور ہم شان دار کام کے بعد واپس جارہے ہیں ’۔مواخذے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ یہ شرم ناک ہے اور صرف دھوکہ ہے۔

عمران ٹرمپ

مزید : صفحہ اول