پنجاب میں آٹا وافر موجود،قیمت میں بلا جواز اضافہ برداشت نہیں کرینگے: عثمان بزدار

پنجاب میں آٹا وافر موجود،قیمت میں بلا جواز اضافہ برداشت نہیں کرینگے: عثمان ...

  



لاہور(جنرل رپورٹر)وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ پنجاب کے شہروں اورتحصیلوں میں سرکاری نرخوں پرآٹے کے تھیلوں کی فراہمی کیلئے 484سیل پوائنٹس قائم کردیئے گئے جبکہ مختلف شہروں اورتحصیلوں میں 207مقامات پر ٹرکوں کے ذریعے بھی سرکاری نرخ پر آٹے کے تھیلوں کی فروخت جاری ہے۔انہوں نے کہا ہے کہ پنجاب میں گندم یا آٹے کی کوئی قلت نہیں،کسی کو آٹے کی قیمت میں بلاجواز اضافہ نہیں کرنے دیں گے۔ علاوہ ازیں ایوان وزیراعلیٰ میں اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سردار عثمان بزدار نے سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت منصوبوں پر کام کی رفتار کو مزید تیزکرنے اور 31 جنوری تک سکیموں کو منظور کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ صوبائی محکمے سکیموں کی منظوری کیلئے ضروری امور جلد سے جلد نمٹائیں،محکموں کی سطح پر سکیموں کی منظوری میں تاخیر برداشت نہیں کی جائے گی۔ اجلاس میں صوبے کے سالانہ ترقیاتی پروگرام پر 6 ماہ کے دوران ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔ وزیراعلیٰ عثمان بزدار کو بریفنگ میں بتایا گیا کہ سالانہ ترقیاتی پروگرام کا مجموعی حجم 350 ارب روپے ہے،جس میں 42 ارب روپے پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت منصوبوں کیلئے رکھے گئے ہیں۔ 17 جنوری2020ء تک سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت 183 ارب روپے جاری کیے جاچکے ہیں اورصوبائی محکمے سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت مختلف منصوبوں پر 106 ارب روپے استعمال کر چکے ہیں اورمحکمہ منصوبہ بندی و ترقیات کی جانب سے گزشتہ 45 روز میں 85 سکیموں کی منظوری دی جا چکی ہے۔ وزیراعلیٰ سردار عثمان بزدارنے کہا کہپنجاب پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ کے تحت اربوں روپے کے منصوبوں کو شروع کیا جا رہا ہے اوران منصوبوں کے آغاز سے صوبے کے عوام کیلئے سہولتوں میں اضافہ ہوگا اور معاشی ترقی کا عمل تیز ہوگا۔وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ ترقیاتی منصوبوں کیلئے جاری ہونے والے فنڈز کا بروقت استعمال یقینی بنایا جائے اور فنڈز کے بروقت استعمال کو یقینی بنانے کیلئے مانیٹرنگ کا موثر نظام ضروری ہے۔ سالانہ ترقیاتی پروگرام کے تحت مقررکردہ اہداف کو ہر صورت حاصل کیا جائے گا۔انہوں نے کہا کہ اہداف پورا نہ کرنے والے محکموں کے خلاف کارروائی ہوگی کیونکہ مجھے کاغذی کارروائی نہیں، عملی اقدامات چاہئیں جبکہ ترقیاتی فنڈز کا بروقت استعمال نہ کرنے والے محکموں کی جواب طلبی ہوگی۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ ہم عوام کے نمائندے ہیں اور عوام کو جوابدہ ہیں لہٰذاہاتھ پر ہاتھ رکھ کر بیٹھے رہنے سے کام نہیں چلے گا۔افسران فیلڈ میں نکلیں اور ترقیاتی سکیموں پر پیش رفت کو خود مانیٹر کریں کیونکہ کاغذوں میں کچھ اور، آن گراؤنڈ کچھ اور،اب یہ سلسلہ نہیں چلے گا۔ میں ہر ماہ سالانہ ترقیاتی پروگرام پر پیش رفت کا خود جائزہ لوں گا۔انہوں نے کہا کہ ترقیاتی منصوبوں کے معیار پر پورا فوکس ہونا چاہیئے۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے مزید ہدایت کی کہ فارن فنڈڈ پراجیکٹس پر کام کی رفتار مزید تیز کی جائے اور غیر ملکی تعاون سے جو منصوبے چل رہے ہیں انہیں بروقت مکمل کیاجائے۔دریں اثناء وزیراعلیٰ پنجاب سے نیشنل یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی کے ریکٹرلیفٹیننٹ جنرل (ر) خالد اصغرنے ملاقات کی۔وزیراعلیٰ عثمان بزدار نے اس موقع پر گفتگوکرتے ہوئے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی کے فروغ سے محکموں کی استعدادکار میں اضافہ کر رہے ہیں۔ محکموں کی کارکردگی بڑھنے سے عوام کیلئے سروس ڈلیوری بہتر ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے صوبے میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کیلئے 8 نئی یونیورسٹیوں پر کام شروع کیا ہے۔ ٹیکنیکل تعلیم کا فروغ نوجوانوں کو بااختیار بنانے میں مددگار ثابت ہوگا۔ پنجاب میں 5 ٹیکنیکل انسٹی ٹیوٹ بھی قائم کئے جا رہے ہیں۔ نئی یونیورسٹیوں اور ٹیکنیکل انسٹی ٹیوٹس کیلئے پسماندہ علاقوں کو فوقیت دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت کیلئے تعلیم کے شعبہ کی بہتری اولین ترجیح ہے اور ہماری حکومت نے تعلیمی بجٹ میں گزشتہ مالی سال کے مقابلے میں خاطرخواہ اضافہ کیا ہے۔

سردار عثمان بزدار

مزید : صفحہ اول