دھرنوں کے باوجود ہمارے دور میں جی ڈی پی گروتھ 5.8 فیصد رہی،اسحق ڈار

دھرنوں کے باوجود ہمارے دور میں جی ڈی پی گروتھ 5.8 فیصد رہی،اسحق ڈار

  



  لندن (آئی این پی) مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق وزیر خزانہ اسحق ڈار نے کہاہے کہ ملکی معیشت چلانے اور کلاس کو پڑھانے میں فرق ہوتا ہے، مسلم لیگ (ن) کے دور میں برآمدات کی  تباہی کاالزام بے بنیاد ہے،کیا کوئی موجودہ حکومت کی ان کوتاہیوں کو تسلیم کرے گا کہ کن وجوہات کے باعث برآمدات میں اضافے کا ڈھنڈورا پیٹا جا رہا ہے حالانکہ ہمارے دور میں غیر یقینی سیاسی صورتحال انجینئر ڈ دھرنوں کی سازش کے باوجود پاکستان مسلم لیگ ن کے دور میں جی  ڈی  پی گروتھ 2018 کے مالی سال تک 5.8 فیصد رہی۔ منگل کو اپنے ٹویٹس میں اسحق ڈار نے کہاکہ مسٹرعاطف کو پتا ہونا چاہیے کہ ملکی معیشت چلانے اور کلاس کو پڑھانے میں فرق ہوتا ہے۔ ہمارے ایکسچینج ریٹ پالیسی جسے ہم نے آئی ایم ایف کے ساتھ مذاکرات کرکے چارہفتے  کے اندر تین سالہ پروگرام منظور کرایا جو کہ پاکستان کی تاریخ کا واحد کامیابی سے مکمل کیا جانے والا آئی ایم ایف پروگرام تھا اس پروگرام کے ذریعے 7.6 ارب ڈالر کا معاہدہ کیا اور اس کے ساتھ ہم نے ایکسچینج ریٹ کو بھی متوازن رکھا۔ جس کے باعث بیرونی سرمایہ کاری آئی۔ ہمارے دور میں افراط زر اوسطاً 5فیصد رہا۔

اسحق ڈار

مزید : صفحہ آخر