آٹا بحران کا بروقت انکشاف کرنے اور ذمہ داران کا تعین کرنیوالے ادارے کا سربراہ ہی زیرعتاب، وزیراعظم نے ڈانٹ پلا دی

آٹا بحران کا بروقت انکشاف کرنے اور ذمہ داران کا تعین کرنیوالے ادارے کا ...
آٹا بحران کا بروقت انکشاف کرنے اور ذمہ داران کا تعین کرنیوالے ادارے کا سربراہ ہی زیرعتاب، وزیراعظم نے ڈانٹ پلا دی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) آٹا بحران کے بارے میں  بروقت معلومات فراہم کرنے اور ذمہ داران کا تعین کرنے والے ادارے مسابقتی کمیشن آف پاکستان کے سربراہ کو ہی وزیراعظم نے ڈانٹ پلا دی اور برہمی کا اظہار کیا، یہ واقعہ 2 روز قبل پیش آیا۔

نجی ٹی وی چینل 92 نیوز کے مطابق گندم اور آٹا سکینڈل کے ذمہ داران کی نشاندہی کرنیوالا ادارہ حکومت کے زیرعتاب آگیاہے ، کمیشن کی سفارشات پر عمل کرنے کی  بجائے الٹا وزیراعظم نے مسابقتی کمیشن کے چیئرمین کو ہی جھاڑ پلادی تاہم حکومتی ذرائع کا کہناہے کہ چیئرمین کو خراب کا رکردگی پر جھاڑ پلائی گئی ۔

رپورٹ کے مطابق  مسابقتی کمیشن کی کافی عرصہ سے گندم اور آٹا سکینڈل کیخلاف کارروائی جاری تھی ، یہ معاملہ وفاقی کابینہ میں بھی پہنچا ، نومبر اور دسمبر میں دو مرتبہ یہ معاملہ کابینہ کے ایجنڈے میں بھی شامل تھا جس کی دستاویزات بھی سامنے آگئی ہیں، کمیشن نے حکومت کو دی گئی رپورٹ میں ذمہ داران کی نشاندہی بھی کی اور فلور ملزایسوسی ایشن کو ذمہ دارقراردیتے ہو ئے ساڑھے سات کروڑ روپے جرمانہ بھی کیا، اس کے ساتھ ساتھ مسابقتی کمیشن نے  حکومت کو متعدد سفارشات بھی بھیجیں جن میں بوگس ملوں کیخلاف کارروائی اور قیمت خود تعین کرنے جیسے نکات بھی شامل تھے ۔ 

ٹی وی چینل نے مزید کہا کہ سفارشات کی روشنی میں کوئی کارروائی نہیں کی گئی بلکہ وزیراعظم ہائوس اور خاص طورپر وزیراعظم کو  غلط معلومات پہنچا دی گئیں اور دو روز قبل اس صورتحال کا دوبارہ جائزہ لیا گیا تو عمران خان نے مسابقتی کمیشن کے سربراہ پر  برہمی کا اظہار کیا ۔ مزید یہ بھی کہا گیا کہ مسابقتی کمیشن نے قانون کے مطابق کارروائی کی اور  رپورٹ کے ساتھ سفارشات بھی پیش کیں۔

مزید : قومی