منیجر کی انگریزی کا مذاق اڑانامہنگا پڑ گیا ، ریسٹورنٹ کے باہر ایسا کام کرنے کا اعلان کہ مالک خواتین کو سمجھ نہ آئے گی ہوا کیا ہے

منیجر کی انگریزی کا مذاق اڑانامہنگا پڑ گیا ، ریسٹورنٹ کے باہر ایسا کام کرنے ...
منیجر کی انگریزی کا مذاق اڑانامہنگا پڑ گیا ، ریسٹورنٹ کے باہر ایسا کام کرنے کا اعلان کہ مالک خواتین کو سمجھ نہ آئے گی ہوا کیا ہے

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )گزشتہ روز اسلام آباد کے معروف نجی ریسٹورنٹ کی مالکن خواتین نے اپنے منیجر اویس کی انگریزی درست نہ بولنے کی مذاق اڑاتے ہوئے ویڈیو بنا کر سوشل میڈیا پر شیئر کر دی جس نے ہنگامہ کھڑا کر دیاہے ۔

وزیراعظم عمران خان نے بھی اس ویڈیو اپنے رد عمل کا دبے لفظوں میں اظہار کیا جبکہ شوبز ستارے بھی اس کے خلاف اٹھ کھڑے ہوئے اور کھری کھری سنا رہے ہیں لیکن اب ایک دلچسپ ترین صورتحال سامنے آ رہی ہے جس میں ایک فیس بک پیج کی جانب سے ریسٹورنٹ کے سامنے اردو ’ مشاعرے‘ کے انعقاد کا اعلان کر دیا گیاہے ۔

فیس بک پیج ” لیمو سوڈا شو “ کے نام سے چل رہاہے جس میں کچھ نوجوان اپنی اخلاقیات کے دائرے میں رہتے ہوئے مزاحیہ ویڈیوز شیئر کرتے ہیں جنہیں صارفین میں بہت جلد ہی مقبولیت حاصل ہونے لگی ہے ، ’ لیمو سوڈا شو ‘ کے پیج منیجرز کی جانب سے ریسٹورنٹ منیجر کا مذاق اڑائے جانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر آنے کے بعد مہم شروع کی گئی اور ریسٹورنٹ کے سامنے ” اردو مشاعرہ “ کروانے کا اعلان کر دیا گیا ۔

کنولی ریسٹورنٹ کی مالکان عظمیٰ چوہدری اور دیا حیدر کو اپنی یہ حرکت بہت مہنگی پڑ گئی ہے اور اب انہیں اپنے ” ہائی فائے “ ریسٹورنٹ کے سامنے مشاعرہ برداشت کرنا پڑے گا جس میں سوشل میڈیا صارفین کی دلچسپی دیکھ کر لگتاہے کہ لوگوں کا بڑا مجمع وہاں اکھٹا ہونے جارہاہے ۔

come 1, come all!

Posted by Limo Soda Show on Thursday, January 21, 2021

لیمو سوڈا شو کی جانب سے سوشل میڈیا پر شروع کی جانے والی مہم میں بتایا گیاہے کہ یہ مشاعرہ کل شام ساڑھے سات بجے شروع ہو گا جو کہ 9:30 تک جاری رہے گا ، جو اس میں شرکت کرنا چاہتے ہیں وہ اپنی دلچسپی کا اظہار کریں ۔ اس مہم میں اب تک سات ہزار سے زائد لوگوں نے اپنی دلچسپی ظاہر کر دی ہے ، جس سے ظاہر ہوتاہے کہ کل شام کو کنولی ریسٹورنٹ کو بڑے ایونٹ کا سامنا کرنا پڑے گا ۔ یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ سوشل میڈیا پر ” بائیکاٹ کنولی “ کا ٹرینڈ بھی تیزی سے مقبولیت حاصل کر رہاہے ۔لیمو سوڈا شو کی جانب سے ایونٹ میں شرکت کیلئے کچھ ضروری ہدایات بھی جاری کی گئیں ہیں جن میں شرکاءسے گزارش کی گئی ہے کہ تمام شاعروں کا اردو یا پنجاب ہونا ضروری ہے ، جو شاعر کامیابی حاصل کرے گا اس برگر کھلایا جائے گا ،ریسٹورنٹ کے مالکان کے خلاف کوئی نعرے نہیں لگائے جائیں گے ، بیکن ہاﺅس کے طلبہ کیلئے مفت شرکت کی دعوت ہے ، احمد فراز کے شعر کہنے کی اجازت نہیں ہو گی ، تمام امیدوار ” رین “ اور ” مارٹن “ کی انگلش گرامر کی کتابیں اچھی طرح پڑھ کر آئیں کیونکہ سرپرائز انگریز سوال وجوابات بھی ہو سکتے ہیں ، شراب نوش، منشیات اور جے ایف تھنڈر نسوار لانے کی ہرگز اجازت نہیں ہے ۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -