بھارتی فاسٹ باؤلر آسڑیلیا میں نارروا سلوک کے خلاف بول پڑے

بھارتی فاسٹ باؤلر آسڑیلیا میں نارروا سلوک کے خلاف بول پڑے
بھارتی فاسٹ باؤلر آسڑیلیا میں نارروا سلوک کے خلاف بول پڑے

  

نیو دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن )دورہ آسڑیلیا کے دوران نسلی تعصب کے واقعہ پر پہلی بار لب کشائی کرتے ہوئے بھارتی فاسٹ باؤلر محمد سراج کا کہنا ہے کہ  آسٹریلیا میں لوگ مجھے گالی دے رہے تھے لیکن میں اس دوران مضبوط رہا اور صرف میچ پر فوکس کرتا رہا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق محمد سراج  کا کہنا تھا کہ آسڑیلوی مڈل آرڈر بیٹسمین  مارنس لابوشین کی وکٹ بہت اہم تھی، اس میچ میں اسمتھ میں اچھا کھیل رہا تھا لیکن لابوشین کی وکٹ ٹیم کے لیے اہم تھی۔ اسمتھ کو آوٹ کرنے کے لیے مجھ پر دباو تھا، اچھا لگا جب اسمتھ کو آوٹ کیا۔میں بھارت کے لیے کھیلنا چاہتا ہوں اور یہاں سے بہت آگے بڑھنا چاہتا ہوں۔

بہتر کپتان کے متعلق پوچھے گئے سوال کے جواب میں انکا کہنا تھا کہ  ویرات کوہلی اور ایجنکے ریحانے دونوں بہترین کپتان ہیں۔ یحانے نے جونیئر کھلاڑیوں کی حوصلہ افزائی کی، انہیں جونیئرز پر بھروسہ تھا ۔

واضح رہے کہ محمد سراج نے والد کی وفات کے بعد دورہ آسڑیلیا جاری رکھتے ہوئے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا،کامیاب دورے کے بعد انڈیا واپس پہنچ کر وہ سب سے پہلے اپنے والد محمد غوث کی قبر پر گئے تھے۔

مزید :

کھیل -