نیب  کا اربوں روپے کے میگا کرپشن مقدمات کی جلد سماعت کیلئے درخواستیں  احتساب عدالتوں میں دائر  کرنے کا فیصلہ 

 نیب  کا اربوں روپے کے میگا کرپشن مقدمات کی جلد سماعت کیلئے درخواستیں ...
 نیب  کا اربوں روپے کے میگا کرپشن مقدمات کی جلد سماعت کیلئے درخواستیں  احتساب عدالتوں میں دائر  کرنے کا فیصلہ 

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) قومی احتساب بیورو(نیب)کے چیئرمین جسٹس (ر)جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب کے بدعنوانی کے 1230 ریفرنسز ملک کی مختلف معزز احتساب عدالتوں میں زیر التوا ہیں جن کی مالیت تقریباً947 ارب روپے ہے، نیب نے فیصلہ کیا ہے کہ اربوں روپے کے میگا کرپشن مقدمات کی جلد سماعت کیلئے درخواستیں معزز احتساب عدالتوں میں دائر کی جائیں تاکہ متعلقہ مقدمات کو نیب آرڈیننس کی شق16اےکے تحت قانون کے مطابق منطقی انجام تک پہنچایا جا سکے۔

تفصیلات کے مطابق چیئرمین نیب جسٹس(ر)جاوید اقبال کی زیر صدارت نیب کا اعلی سطح کا اجلاس  ہواجس میں  نیب کی مجموعی صورتحال،خصوصا میگاکرپشن کے مقدمات کو منطقی انجام تک پہنچانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کہا کہ ملک سے بدعنوانی کا خاتمہ، بدعنوان عناصر سے قوم کی لوٹی گئی رقوم کی واپسی اور قومی خزانہ میں جمع کرانا اوّلین ترجیح ہے۔ چیئرمین نے نیب کے آپریشن ڈویژن، تمام علاقائی بیوروز اور پراسیکیوشن ڈویژن کو ہدایت کی کہ میگاکرپشن مقدمات کی احتساب عدالتوں میں موثر اور بھرپور تیاری کے ساتھ ٹھوس شواہد، گواہوں کے بیانات اور دستاویزات کی بنیاد پر پیروی  کی جائے تاکہ اربوں روپے کی بدعنوانی، منی لانڈرنگ اور عوام کو بڑے پیمانے پر لوٹنے والوں کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کرکے قانون کے مطابق ان کو سزا دلوائی جا سکے اور ملک و قوم کے لوٹے گئے اربوں روپے برآمد کرکے قومی خزانہ میں جمع کرائے جائیں۔

انہوں نےکہاکہ نیب نےٹھوس شواہد کی بنیاد پر بدعنوانی کے ریفرنسز مختلف معزز احتساب عدالتوں میں جمع کرائے ہیں،معزز احتساب عدالتوں کے باہر بدعنوانی کے ثبوت تلاش کرنے والے معزز افراد کو نیب کا مشورہ ہے کہ وہ نیب کو ہدف تنقید بنانے کی بجائے اپنی تمام تر توانائیاں معزز احتساب عدالتوں  میں اپنے خلاف دائر نیب کے ٹھوس شواہد کی بنیاد پر دائر بدعنوانی کے ریفرنسز کے دفاع پر خرچ کریں جہاں قانون اپنا راستہ خود بنائے گا۔ 

مزید :

قومی -