شہباز،حمزہ کی منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانتوں میں توسیع 

  شہباز،حمزہ کی منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانتوں میں توسیع 

  

 لاہور(نامہ نگار)بینکنگ جرائم عدالت کے جج سردار طاہر صابر نے میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی منی لانڈرنگ کیس میں عبوری ضمانتوں میں 28 جنوری تک توسیع کردی،دوران سماعت فاضل جج نے ریمارکس دیئے کہ ایف آئی اے کا چالان 24 جنوری کو جمع ہونے کے بعد شہباز شریف اور حمزہ کے پاس 4 روز کا وقت ہو گا، 28 جنوری کو ملزموں نے میرے پاس نہیں آنا، عدالت نے جب دائرہ اختیار کا فیصلہ کر دیا تو یہ کیس یہاں سننا بنتا ہی نہیں، کیس کی سماعت شروع ہوئی تو ایف آئی اے پراسکیوٹر معظم حبیب جبکہ حمزہ شہباز اپنے وکیل امجد پرویز ایڈووکیٹ کے ہمراہ عدالت پیش ہوئے،دوران سماعت امجد پرویز ایڈووکیٹ نے میاں شہباز شریف کی کورونا کے باعث حاضری معافی کی درخواست دائر کی گئی،درخواست کے ساتھ میاں شہباز شریف کی کورونا مثبت رپورٹ بھی لف کی گئی ہے،عدالت سے استدعاہے کہ کوروناکی بنیاد پر شہباز شریف کو حاضری سے استثنیٰ دیا جائے،عبوری ضمانت میں توسیع کے لئے درخواست بھی دی ہے، ایف آئی کے تفتیشی افسر نے عدالت کوبتایا کہ 24 جنوری تک متعلقہ عدالت میں چالان جمع کروا دیں گے، امجد پرویز ایڈووکیٹ نے کہا کہ میاں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی عبوری ضمانت کیلئے مناسب وقت دیاجائے،16 ماہ ہو گئے فائل بغل میں دبائے لئے پھر رہے ہیں، ایف آئی کے پراسیکیوٹر نے کہا کہ امجد پرویز ایڈووکیٹ ہر بار یہی بات کرتے ہیں،فاضل جج نے کہا کہ وہ ٹھیک بات کر رہے ہیں، آپ دفاع کر رہے ہیں، آپ نے چالان کیوں نہیں جمع کروایا؟آپ کے بورڈ نے جب کہہ دیا تھا کہ چالان سپیشل کورٹ سنٹرل میں جمع کروانا ہے تو کیوں نے جمع کروایا، یہ کوئی بات ہے کرنے والی، آپ سارے لوگ نکمے ہیں، ایف آئی اے کے پراسیکیوٹر نے کہا کہ  میاں شہبازشریف اور حمزہ شہباز پر العربیہ شوگر مل اور رمضان شوگر مل کے ذریعے منی لانڈرنگ کرنے کا الزام عائد ہے، حمزہ شہباز پر مبینہ 25 ارب کی منی لانڈرنگ کا الزام عائد ہے، حمزہ شہباز رمضان شوگر مل کے سی ای او تھے، عدالت نے مذکورہ بالاریمارکس کے ساتھ سماعت ملتوی کردی۔

توسیع

مزید :

صفحہ اول -