سبطین خان کیخلاف چنیوٹ مائنز اینڈ منرلز ریفرنس پر سماعت ملتوی 

 سبطین خان کیخلاف چنیوٹ مائنز اینڈ منرلز ریفرنس پر سماعت ملتوی 

  

لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج اسد علی نے صوبائی وزیر سبطین خان کے خلاف چنیوٹ مائنز اینڈ منرلز ریفرنس پر سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی،گزشتہ روز صوبائی وزیر سبطین خان عدالت میں پیش نہیں ہوئے ان کے وکلاء نے حاضری معافی کی درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیارکیا کہ سبطین خان کی طبیعت ناساز ہے  عدالت سے استدعاہے کہ حاضری معافی کی درخواست منظور کی جائے،جسے عدالت نے منظور کرلیا  سبطین خان کے شریک  ملزمان  احتساب عدالت میں پیش ہوئے اور اپنی حاضری مکمل کرائی،دوران سماعت سبطین خان کے وکیل حیدر رسول نے بریت کی درخواست پر نئے ترمیمی آرڈیننس  کے  پرانے کیسز پر اطلاق سے متعلق دلائل دیتے ہوئے کہا کہ سبطین خان کے دور میں معدنیات کا ٹھیکہ نہیں دیا گیا،عدالت سے استدعاہے کہ اسے بری کیا جائے، وکیل نے مزید کہا کہ عبوری حکومت کے دور میں ٹھیکہ دیا گیا،نیب کے پراسیکیوٹر نے کہا کہ سبطین خان کیدور میں ارشد وحید کی کمپنی کو ٹھیکہ دینے کا ابتدائی کام شروع ہوا سبطین خان نے مالی فائدے اٹھایا،نیب کے پراسیکیوٹر اسد اللہ ملک نے سبطین خان کی  بریت کی درخواست مسترد کرنے کی استدعا کی،صوبائی وزیر سبطین خان اور دیگر ملزمان نے نئے ترمیمی نیب آرڈیننس کے تحت بریت کی درخواست دائر کر رکھی ہے، صوبائی وزیر سبطین خان پر  چنیوٹ میں معدنیات  کا ٹھیکہ من پسند کمپنی کو دینے کا الزام ہے۔

 سبطین خان

مزید :

صفحہ آخر -