ڈیسکون کیلئے زیادہ افرادی قوت برآمد کرنے پر ایوارڈ 

ڈیسکون کیلئے زیادہ افرادی قوت برآمد کرنے پر ایوارڈ 

  

اسلام آباد(پ ر) بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ نے اسلام آباد میں ایوارڈ کی تقریب کا انعقاد کیا جس میں ڈیسکون کو گزشتہ 3سالوں میں پاکستان سے سب سے زیادہ افرادی قوت برآمد کرنے پر ایوارڈ سے نوازا گیا۔ ڈیسکون نے بطور پاکستان سے افرادی قوت برآمدکرنے والے سب سے بڑے ادارے کے اس کارنامے کا سرانجام دینے میں اہم کردار ادا کیا۔ ملک میں مجموعی طور پر 4ہزار 582رجسٹرڈ پروموٹرز ہیں، جبکہ گزشتہ 3سالوں کے دوران ڈیسکون حکومتی اور کمپنی ضوابط وطریقہ کار کی جامع تکمیل کو یقینی بناتے ہوئے 13ہزار سے زائد افرادی قوت کو بھرپورانداز میں متحرک کرنے میں کامیاب رہا ہے۔ اس موقع پر منعقدہ تقریب کے مہمان خصوصی وزیر اعظم کے مشیر برائے سمندر پار پاکستانی اور انسانی وسائل محمد ایوب آفریدی تھے۔ جبکہ دیگر معززین میں پاکستان اوورسیز ایمپلائمنٹ پروموٹر ایسو سی ایشن (POEPA) کے چیئرمین سرفراز ظہور چیمہ، ڈائریکٹر جنرل بیورو آف امیگریشن اینڈ اوورسیز ایمپلائمنٹ کاشف احمد نور اور چیئرمین NAVTTCسید جاوید حسن بھی شریک تھے۔ ڈیسکون کو یہ بھی اعزاز حاصل کے کہ اس نے مقامی روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے علاوہ 3سالوں میں پاکستان سے 13ہزار سے زائد ملازمین کو ذمہ داری کے ساتھ بیرون ملک بھیجا ہے۔ ان ملازمین کو ڈیسکون کے اشتراک سے دنیا بھر کے مختلف پروجیکٹس اور وینچرز میں کام کرنے کیلئے بھیجا گیا ہے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے افرادی قوت اینڈ پیپلز سروسز کے صدر مرتضیٰ علی کا کہنا تھا کہ’ڈیسکون انجینئرنگ بہتر روزگار کے امکانات کے ذریعے لوگوں کی مدد کو اہل بنانے میں مستقل مزاجی سے کام کر رہے ہیں۔ جو ان ملازمین کو نہ صرف مالی طور پر با اختیار بنانے میں مدد کرے گا بلکہ ان کے اہل خانہ کو بھی سماجی و اقتصادی طور پر مستحکم بنائے گا۔ ہمیں زرمبادلہ کے مواقع پیدا کرکے ترسیلات زر میں اضافہ کرنے کے ساتھ پاکستان کی خوشحالی میں اپنا کردار ادا کرنے پر فخر ہے۔ 

ڈیسکون کو دیگر افرادی قوت کی خدمات فراہم کرنے والی کمپنیوں کے مقابلے اپنے منصوبوں کیلئے زیادہ انسانی وسائل برآمد کرنے کی برتری بھی حاصل ہے۔ اس ضمن میں ڈیسکون ٹیکنیکل انسٹیٹیوٹ (ڈی ٹی آئی)، ڈیسکون کا ایک فلیگ شپ سی ایس آر پروجیکٹ ہے، جو پیشہ وار، با صلاحیت افراد کے فیڈر کے طور پر کام کرتا ہے جسے ڈیسکون بیرون ملک برآمد کرتا ہے۔ یہ ڈیسکون کے گزشتہ کئی سالوں میں ہونے والی پیشرفت اور عالمی سطح پر پاکستان کے امیج کو بہتر بنانے اور ملازمین اور ان کے اہل خانہ کی سماجی و اقتصادی حیثیت کو بہتر بنانے میں مدد کرنے کے عزم کا مزید ثبوت ہے۔ تاہم موجودہ وبائی مرض کے باوجود آپریشنز کو سرانجام دینا آسان نہیں تھا، سب کی حفاظت اور فلاح و بہبود کو مد نظر رکھتے ہوئے COVIDکے تمام پروٹوکولز اور ایس او پیز پر سختی سے عملدرآمد اور پیروی کرتے ہوئے کیا گیا۔ اس وقت ڈیسکون پاکستان، سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، قطر، کویت، عمان، عراق اور جنوبی افریقہ میں کاروباری مفادات رکھتا ہے، جو عالمی سطح پر پاکستان کے پرچم کو سربلند رکھنے میں اپنا بھرپور کردار ادا کر رہاہے۔ 

مزید :

کامرس -