کھادبحران جاری،کسان سفارشی پرچیاں لانے پرمجبور  

کھادبحران جاری،کسان سفارشی پرچیاں لانے پرمجبور  

  

 مظفرگڑھ،ٹبہ سلطان پور،چوک اعظم (تحصیل رپورٹر،سٹی رپورٹر،نامہ نگار) جنوبی پنجاب  بھر میں کھاد کا بحران سنگین ہوگیا،مظفرگڑھ میں 6لاکھ ایکڑ پر اگائی گئی گندم کی فصل برباد اور پیدوار متاثر ہونے کا خدشہ ہے،سرکاری کھاد پوائنٹس پر بھی سرکاری نرخ سے (بقیہ نمبر3صفحہ6پر)

زیادہ ریٹ پر کھاد فروخت کی جانے لگی،سرکاری نرخ پر کھاد فروخت کرنے والے ڈیلرز بھی ممبران اسمبلی،ضلعی انتظامیہ کے افسران اور بااثر شخصیات کی پرچیوں پر کھاد فروخت کرنے پر مجبور ہوگئے،عام کسان گھنٹوں لمبی لائنوں میں خوار ہونے کے باوجود بھی خالی ہاتھ واپس لوٹنے لگے۔دوسری جانب زراعت آ فیسرٹبہ سلطانپورامتیازشاہ کی مبینہ آ شیربادسیڈیلروں نے یوریاکھادکی بلیک مارکیٹنگ تیزکردی ہے۔ کسانوں کوشدیدپریشانی کاسامنا ہے۔ کاشتکاروں نویداحمد،ندیم شاہ،محمدفیاض،محمد رمضان، محمدارشد،محمداقبال ودیگرنے اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ادھرڈپٹی کمشنرلیہ محمدشہبازحسین کی ہدایت پر کھاد بحران کو قابوکرنے اور کاشتکاروں کو سرکاری نرخوں پر کھاد کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے لائحہ عمل تیار کرلیاگیا۔ضلع کی 48یونین کونسلوں میں کھاد کے لئے سیل پوائنٹ قائم کردیئے گئے ہیں۔ڈپٹی ڈائریکٹرزراعت غلام یاسین واندر نے بتایا کہ کھادکے ذخیرہ اندوزوں او ر غیرقانونی سمگلنگ کی روک تھام کے لیئے کارروائیاں تیز کردی گئی ہیں۔ 

کھادبحران

مزید :

ملتان صفحہ آخر -