حاصل پور: پولیس خاموش‘ ویگنوں بسوں  کی چھتوں پر طلبہ کو سوار کیا جانے لگا

 حاصل پور: پولیس خاموش‘ ویگنوں بسوں  کی چھتوں پر طلبہ کو سوار کیا جانے لگا

  

 حاصل پور (نمائندہ خصوصی‘ نمائندہ پاکستان) سکول کے معصوم بچوں کی ٹریفک حادثہ میں شہادت کے وقوعہ نے پوری قوم کو ہلا کر رکھ دیا تھا جس کے بعد انتظامیہ نے بھی نکھیں کھول لی تھی اور دو تین دن تک ایکشن میں رہی (بقیہ نمبر8صفحہ6پر)

لیکن اب پھر انتظامیہ ٹریفک پولیس پٹرولنگ پولیس نے آنکھیں بند کر لی۔جبکہ بہاولپور میں ٹریفک پولیس کے اہلکار رشوت کا بازار گرم کے ہوے ہیں۔دیگر شہروں سے آنے والے کار سواروں کو ناجائز تنگ کیا جاتاہے۔ان کے بلاجواز چالان کردیے جاتے  ہیں سکولز و کالجز کے طلبا و طالبات کی جانوں کے تحفظ کے لیے جو ایس او پیز بنائے گئے تھے ان کی دھجیاں اڑا کر رکھ دی ہیں حاصل پور میں قانون نام کی کوئی چیز نہیں ہے ویگنوں بسوں میں چھتوں پر طلبہ کو بھیڑ بکریوں کی طرح سوار کرکے لے جایا جا رہا ہے لیکن پولیس کے کسی شعبہ یا انتظامیہ نے ایکشن لینے کی زحمت گوارہ نہیں کی ڈی پی او بھاول پور کا بیانیہ بھی یہاں پر مٹی میں دب کر رہ گیا ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -