کراچی، تیز ہواؤں سے چھتیں اڑ گئیں، دیواریں گرنے، کرنٹ لگنے سے بچے سمیت 5افرا د جاں بحق

  کراچی، تیز ہواؤں سے چھتیں اڑ گئیں، دیواریں گرنے، کرنٹ لگنے سے بچے سمیت ...

  

       کراچی(سٹاف رپورٹر) شہر قائد میں تیز ہواؤں نے تباہی مچادی، چھتیں اڑ گئیں جبکہ دیواریں گرنے کے واقعات میں کرنٹ لگنے سے بچے سمیت 5 افراد جاں بحق ہوگئے  لانڈھی مانسہرہ کالونی گلی نمبر10 کے قریب گھر میں کرنٹ لگنے سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا، جاں بحق ہونے والے شخص کو چھیپا ایمبولینس کے ذریعے جناح ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں اس کی شناخت خوانین ولد غلام جان کے نام سے ہوئی۔ریسکیو ذرائع کے مطابق سرجانی گلشن کنیز فاطمہ سوسائٹی کے قریب گھر کی دیوار گر نے سے ایک بچہ جاں بحق ہوا، بچے کی باڈی چھیپا ایمبولینس کے ذریعے عباسی ہسپتال منتقل کی گئی۔شہرِ قائد میں گلبائی پل کے قریب زیرِ تعمیر عمارت کی دیوار گرنے سے اس کے ملبے تلے دب کر مزدور جاں بحق ہوا  پولیس کے مطابق تیز ہوا کے باعث نارتھ ناظم آباد کے بلاک ایل کے قریب واقع ایک گھر کی دیوار بھی گر گئی، جس کے نیچے دب کر ایک شخص جاں بحق ہو گیا۔پولیس کا کہنا ہے کہ تیز ہوا سے مواچھ گوٹھ بلدیہ ٹاون میں چھت کا کچھ حصہ گر گیا، جس کے ملبے تلے دب کر خاتون سمیت 2 افراد زخمی ہو گئے پولیس نے بتایا کہ چلنے والی تیز ہوا کی وجہ سے اورنگی ٹاون میں بجلی کا کھمبا گرنے سے ایک شخص زخمی ہو گیا۔پاپوش نگر میں واقع سرکاری اسکول کی دیواریں بھی گر گئیں، تاہم وہاں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ سندھ اسمبلی کے باہر جماعت اسلامی کے دھرنے کے ٹینٹ اکھڑ گئے۔کراچی میں تیز ہواؤں کے باعث تقسیم اسناد کیلئے لگائے گئے ٹینٹ اکھڑ گئے، موسم کی خرابی کے باعث جامعہ کراچی کا سالانہ تقسیم اسناد ملتوی کردیا گیا۔رجسٹرار جامعہ کراچی پروفیسر ڈاکٹر عبدالوحید نے اعلان کیا کہ جلسہ تقسیم اسناد غیر متوقع موسمی تبدیلی کے پیش نظر ملتوی کیا گیا  جلسہ کے انعقاد کی نئی تاریخ کا اعلان بعد میں کیا جائے گا۔موسم کی موجودہ صورتحال رات گئے تک برقرار رہنے کی پیش گوئی کی گئی جبکہ حکام نے شہریوں کو محتاط رہنے کی ہدایت کردی  

تیز ہوائیں 

مزید :

صفحہ اول -